The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کا 92 واں روز، قابض فوج نے متعدد نوجوان گرفتار کرلیے

سری نگر : مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو اورلاک ڈاؤن کو بانوے روز ہوگئے۔ کٹھ پتلی انتظامیہ نے ساڑھے چارسو کشمیری صحافیوں، وکلا اور تاجروں پر وادی سے باہر جانے پر پابندی لگادی۔

تفصیلات کے مطابق مودی سرکاری کی جانب سے آرٹیکل 370 اے ختم کرنے کے بعد مقبوضہ کشمیر میں 92ویں روز بھی کرفیو جاری ہے، وادی میں انٹرنیٹ،،موبائل سروس بند،ٹرانسپورٹ معطل،تعلیمی ادارے، کاروباری مراکز،دکانیں بدستور بند ہیں۔

بھارتی فورسز نے گھر گھر تلاشی کے دوران متعدد کشمیری نوجوانوں کو گرفتار کرلیا۔ بھارت کے غاصبانہ قبضے، مسلسل کرفیو اور لاک ڈاؤن نے کشمیر جنت نظیر کا حسن گہنا دیا۔

کشمیری نوجوان، بچے، بزرگ اورخواتین اپنے لہو سے آزادی کی جدوجہد آگے بڑھا رہے ہیں۔ بانوے روز سے کشمیری گھروں میں محصور ہیں۔ تعلیمی ادارے بند، ٹرانسپورٹ معطل ہے۔

کاروباری مراکز کی مسلسل بندش نے کشمیریوں کے روزگار تباہ کردئیے۔ صرف آئی ٹی کے شعبے میں پچیس ہزارافراد بیروزگارہوچکے ہیں۔ بھارتی فورسز گھر گھر تلاشی کے بہانے چادر اورچاردیواری کا تقدس پامال کررہی ہیں۔

مختلف علاقوں کے محاصرے اور چھاپوں کے دوران متعدد کشمیری نوجوانوں کو گرفتار اور خواتین کی عصمت دری کی جارہی ہے۔ بھارت نواز کٹھ پتلی انتظامیہ نے ساڑھے چارسو افراد کے کشمیر سے باہر جانے پر پابندی عائد کردی ہے، ان میں صحافی، وکلاء اور تاجر شامل ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں