The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کا مسلسل گیارہواں روز

سری نگر: مقبوضہ کشمیر میں بھارتی حکومت کی جانب سے کرفیو نافذ کیے مسلسل گیارہ روز بیت گئے، جنت نظیر وادی دنیا کی سب سے بڑی جیل کی صورت اختیار کرگئی۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی حکومت کی جانب سے مقبوضہ وادی کی خصوصی حیثیت آٹیکل 370 اور 35اے کے خاتمے کے بعد سے وادی میں کرفیو نافذ ہے جسے آج پورے گیارہ روز گزر گئے۔

نہتے اور آزادی کی آواز اٹھانے والے حریت پسند کشمیریوں کے لیے جنت نظیر وادی دنیا کی سب سے بڑی جیل کی صورت اختیار کرگئی کیونکہ مسلسل کرفیو کے باعث وہاں اشیائے خوردونوش، ادویات سمیت غذائی اجناس کی شدید قلت پیدا ہوگئی۔

حکومت نے مقبوضہ وادی میں کرفیو کے بعد سے انٹرنیٹ ، موبائل اور ٹیلی فون سروس بھی بند کی ہوئی ہے جبکہ صحافیوں کے داخلے اور کوریج پر بھی مکمل پابندی ہے۔

انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل کے مطابق کشمیر میں لاک ڈاؤن کے باعث کشمیری اظہار رائے نہیں کرپارہے جو انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے مطالبہ کیا کہ کشمیریوں کے حقوق کی خلاف ورزی کسی صورت نہیں ہونا چاہیے۔ عالمی ادارے کا کہنا ہے کہ ہمارے علم میں ہے کہ کشمیر میں پانچ اگست سے بلیک آؤٹ ہے جبکہ وہاں سیاسی رہنماؤں اور کارکنان کو بھی قید کیا جارہا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں