The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاؤن 165 روز سے برقرار، فائرنگ سے نوجوان شہید

سرینگر : مقبوضہ جموں کشمیر میں کرفیو اور لاک ڈاؤن مسلسل 165 روز سے جاری ہے، مقبوضہ وادی میں انٹرنیٹ،موبائل فون سروس بدستورمعطل ہے، بھارتی فورسز کی فائرنگ سے نوجوان شہید ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کی جارحیت بدستور جاری ہے اور وادی میں لاک ڈاؤن کا 113واں روز ہے، کشمیری روز مرہ کی ضروری اشیاء خریدنے سے بھی قاصر ہیں، دودھ بچوں کی خوراک، ادویات سب ختم ہو چکا ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاؤن کے باعث کشمیریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ کرفیو اور پابندیوں کے باعث اب تک مقامی معیشت کو ایک ارب ڈالر کا نقصان ہوچکا ہے جبکہ ہزاروں لوگ بے روزگار ہوچکے ہیں۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق ڈوڈا میں بھارتی فورسز کی فائرنگ سے نوجوان شہید ہوگیا، بھارتی فائرنگ سے ایک ہفتے میں شہید نوجوانوں کی تعداد پانچ ہوگئی۔

کشمیری رہنما سید علی گیلانی کا کہنا ہے کہ بھارتی فورسز مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی کررہی ہیں لیکن بے گناہ کشمیری نوجوانوں کی شہادت رائیگاں نہیں جائے گی۔

مودی حکومت کی جانب سے آرٹیکل 370 کی منسوخی کے بعد مقبوضہ وادی میں اسکول، کالجز اور تجارتی مراکز بند ہیں، مقبوضہ وادی میں نظام زندگی مفلوج ہوچکا ہے، بھارتی فورسز نے کشمیریوں کے لیے سانس لینا بھی مشکل کر دیا ہے۔

مقبوضہ وادی میں پبلک ٹرانسپورٹ بند اور مواصلاتی رابطے نہ ہونے کی وجہ سے کشمیری عوام اور ڈاکٹرز کو اسپتال جانے میں بھی مشکلات کا سامنا ہے، طلباء اسکولوں، کالجز اور یونیورسٹی میں نہیں پہنچ پا رہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں