The news is by your side.

Advertisement

کشمیری شاعری، دردناک موسیقی کی دنیا میں تشہیر سے مسئلہ کشمیر اجاگر کیا جا سکتا ہے: شیریں مزاری

اسلام آباد: وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق ڈاکٹر شیریں مزاری نے کہا ہے کہ ہمیں کشمیر کے حوالے سے روایتی ڈپلومیسی سے آگے بڑھنا ہوگا، کشمیری ثقافت، شاعری، ان کی دردناک موسیقی کو دنیا بھر میں پھیلا کر مسئلہ کشمیر اجاگر کیا جا سکتا ہے۔

ڈاکٹر شیریں مزاری نے ’کشمیر آرٹ کے ذریعے‘ کے موضوع پر آج اسلام آباد میں منعقدہ نمائش کے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہمیں کشمیر کے حوالے سے روایتی ڈپلومیسی سے آگے بڑھنا ہوگا، وزیراعظم عمران خان نے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے ایک بہترین بیانیہ پیش کیا جس کو دنیا بھر میں نہ صرف سراہا گیا بلکہ مودی کے شرم ناک عزائم بھی بے نقاب ہوئے۔

انھوں نے کہا کسی بھی معاشرے میں مسائل کو اجاگر کرنے اور تحریکوں کو کامیاب بنانے میں سول سوسائٹی کا بنیادی کردار ہوتا ہے، فلسطین کی تحریک کو بھی دنیا بھر میں کامیاب بنانے میں دنیا بھر کی سول سوسائٹی نے اہم کردار ادا کیا، یہی وجہ ہے کہ متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان تعلقات قائم ہونے پر کوئی بھی یورپین ملک واہ واہ نہیں کر رہا کیوں کہ وہاں پر سول سوسائٹی بہت فعال ہیں۔

شیریں مزاری کا کہنا تھا ہمیں وزیر اعظم کے کشمیر کے حوالے سے پیغام کو آگے لے کر جانا ہے تاکہ کشمیریوں کو ان کی منزل تک پہنچایا جا سکے۔

انھوں نے کہا ہماری وزارت کی طرف سے ڈیجیٹل فلم فیسٹیول جاری ہے جس میں پہلی فلم کشمیر کے حوالے سے وزارت کی ویب سائٹ پر جاری کی گئی اور اس فلم کا نام فریاد تھا جس کو 5 لاکھ افراد نے آن لائن دیکھا۔

وفاقی وزیر نے کہا ہمیں کشمیر کا مقدمہ لڑنے کے لیے نئے طریقے اختیار کرنا ہوں گے تاکہ ہم معنی خیز انداز میں کشمیر کا بیانیہ اجاگر کر سکیں۔

تقریب میں میں 100 سے زائد تصاویر رکھے گئے تھے جن میں کشمیر میں جاری لاک ڈاؤن کی منظر کشی کی گئی تھی، یہ تصاویر ملک کے نامور مصوروں، طالب عملوں اور دیگر شعبہ زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے تیار کی تھیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں