The news is by your side.

Advertisement

جیل کےاندربہت گرمی ہے، میں یہاں مرجاؤں گا، بے گناہ کشمیری نوجوان کی فریاد

مقبوضہ کشمیر، کرفیو کا 46واں روز، نظام زندگی مفلوج

سری نگر: مقبوضہ وادی کشمیرمیں آج مسلسل46ویں روزبھی محاصرہ اور کرفیو نافذ رہا، بھارتی فوج کی سختیوں کے باعث کشمیری شدید مشکلات کا شکار ہیں اور وہاں نظام زندگی مفلوج ہوگیا۔

کشمیر میڈیا سروس کی رپورٹ کے مطابق سخت فوجی محاصرےاورکرفیوکےباعث کشمیریوں کوشدیدمشکلات کاسامنا ہے، بھارتی فورسز کی تعیناتی کی وجہ سے علاقےمیں خوف وہراس پھیلا ہوا ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گھروں میں محصورلوگ روزمرہ کی ضروریات پوری کرنےسےقاصر ہیں، بازار، کاروباری مراکز، تعلیم ادارے 46 روز سے مسلسل بند جبکہ سڑکوں پر ٹریفک کی آمد ورفت بھی معطل ہے۔

کشمیر میڈیا سروس کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ ہے وادی میں تاحال انٹرنیٹ،موبائل فون سروس معطل، ٹی وی چینلز کی نشریات بحال نہیں کی گئی جبکہ وادی  سےگرفتارکشمیری نوجوانوں اور حریت قیادت کو دوردراز بھارتی شہروں کی جیلوں میں منتقل کیا گیا ہے۔

برطانوی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق آگرہ کی سینٹرل جیل میں درجنوں کشمیریوں کےقید ہونےکاانکشاف سامنے آیا۔ شہری کا کہنا ہے کہ بھارتی فورسزگھروں سےنوجوانوں کو بلاوجہ حراست میں لے لیتے ہیں، مجھےنہیں پتہ میرےبھائی کو کیوں گرفتار کیا گیا‘‘۔

میڈیا سروس کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جیل میں قید ایک قیدی نے فریاد کی کہ ’’جیل میں بہت گرمی ہے ، میں یہاں مرجاؤں گا‘‘۔ دوسری جانب حراست میں لیے گئے نوجوانوں کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ پیاروں سےملنےکے لیے ہمیں سیکڑوں کلومیٹرکا فاصلہ طےکرنا پڑتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں