The news is by your side.

Advertisement

بڑی بے حسی، کشمیری محلہ پھر زیر آب آ گیا

کراچی: شہر قائد میں مون سون کے چوتھے اسپیل کے دوران تیسرے روز بھی بارش جاری ہے، شہر کے مختلف علاقوں میں ناقص نکاسی آب کے باعث شہری شدید اذیت میں مبتلا ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق کراچی کے علاقے گلبہار میں کشمیری محلہ بھی ان علاقوں میں سے ایک ہے جہاں بارش انتظامیہ کی غفلت اور بے حسی کے باعث سخت اذیت کا سبب بن جاتی ہے۔

حالیہ بارش میں بھی کشمیری محلہ پھر زیر آب آ گیا ہے لیکن انتظامیہ نہیں جاگ سکی ہے، بارش کے بعد گلبہار کے کشمیری محلے کی صورت حال نہایت ابتر ہے، لیاری ندی اوور فلو ہونے کے باعث ندی کا کچرا علاقے میں پھیل گیا ہے۔

علاقے میں جگہ جگہ کیچڑ اور گندگی کے ڈھیر بن گئے ہیں، بدبو اور تعفن سے علاقہ مکین شدید پریشانی میں مبتلا ہیں، بارش اور سیوریج کے پانی کے باعث علاقہ زیر آب ہے اور نکاسی کا کام شروع نہیں ہو سکا ہے، کیچڑ کے باعث لوگ اپنے گھروں سے نکل نہیں پا رہے ہیں۔

علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ بارشوں میں ہمیشہ اس محلے میں یہی مسئلہ ہوتا ہے لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوتی، تاحال یہاں کوئی مشینری، عملہ یا کوئی وزیر نہیں آیا۔

ادھر کراچی کے علاقے عزیز آباد بلاک ٹو میں بھی سیوریج کا گندا پانی گھروں سے نکالا نہیں جا سکا ہے، سیوریج لائنز خراب ہو چکی ہیں، گٹر چوک ہونے کے باعث بارش کے بعد پانی گھروں میں داخل ہو چکا ہے، علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ کئی بار واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کو شکایت کر چکے ہیں لیکن واٹر بورڈ نے نہ بوسیدہ لائنیں تبدیل کی نہ چوک مین ہولز کی صفائی کی، عوام اپنی مدد آپ کے تحت صفائی کرنے اور پانی نکالنے پر مجبور ہیں۔

خیال رہے کہ کراچی میں تیسرے روز صبح 8 بجے سے اب تک کہاں کتنی بارش ریکارڈ کی گئی، محکمہ موسمیات نے اس کے اعداد و شمار جاری کر دیے ہیں۔

موسمیات کے مطابق کراچی میں سب سے زیادہ بارش سرجانی میں 23 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی ہے، فیصل بیس میں 19، مسرور بیس میں 12.5 ملی میٹر، لانڈھی میں 8.5، سعدی ٹاؤن میں 8.4، نارتھ کراچی میں 5.6 ملی میٹر، جناح ٹرمینل میں 4.4، اولڈ ایئرپورٹ پر 4، ناظم آباد میں 3.2، جوہر اور یونی ورسٹی روڈ پر 1.8، کیماڑی میں 1.3 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں