The news is by your side.

Advertisement

کیکڑا ون میں ڈرلنگ کا عمل مکمل ،تیل وگیس کے ذخائر کی تلاش میں بڑی کامیابی ملنے کا امکان

اسلام آباد :گہرے سمندر میں کیکڑا ون بلاک میں ڈرلنگ کا عمل مکمل کرلیا گیا، ڈرلنگ مکمل ہونے کے بعد آئندہ 48گھنٹے اہم ہے،  تیل وگیس کے ذخائر کی تلاش میں کامیابی چند دنوں میں متوقع  ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کی ساحلی پٹی پر جاری کیکڑاا ون پروجیکٹ میں اہم پیش رفت سامنے آئی، 4 ماہ بعد کراچی سے 280 کلو میٹر دور زیر سمندر تیل و گیس کی تلاش کیلئے مطلوبہ ڈرلنگ کا مرحلہ مکمل کر لیا گیا، کیکڑا ون بلاک میں 5ہزار 470 میٹرگہرائی تک ڈرلنگ کی گئی۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق ای این آئی کمپنی پر مشتمل جوائنٹ وینچر نے تیل وگیس کی حقیقی مقدار کے تعین کیلئے ٹیسٹنگ کا عمل شروع کردیا ہے ، ٹیسٹنگ کا عمل 48 سے72 گھنٹےمیں مکمل کرلیاجائےگا جبکہ تیل وگیس کی مقدار کی رپورٹ ایک ہفتےمیں تیارکی جائےگی۔

ابتدائی اندازے کے مطابق تیل وگیس کے ذخیرہ تک رسائی حاصل کرلی گئی، کیکڑا ون بلاک میں 9 ٹریلین کیوبک فٹ گیس اور خام تیل کی بڑی مقدار موجود ہوسکتی ہے، ڈرلنگ کے عمل کے دوران آپریشن ٹیم کو ہائی پریشر کا سامنا کرنا پڑا۔

اگر ذخائر کی مالیت 10ارب ڈالر ہوئی تو گیس و تیل کو نکالنے کیلئے سمندر میں انفراسٹرکچر بچھایا جائے گا جبکہ پاکستان کا پٹرولیم مصنوعات کا امپورٹ بل 6ارب ڈالر سالانہ کم ہونے کی بھی امید ہے۔

مزید پڑھیں : ماڑی پٹرولیم نے تیل کے بڑے ذخائر ملنے کی خوشخبری سنادی

دوسری جانب ڈرلنگ مکمل کرنے والی کمپنی کے درآمد کردہ ڈرلنگ بحری جہاز، ہیلی کاپٹرزاور دیگر سامان کو ایف بی آر کی جانب سے تاحال کلئیرنس نہ مل سکی، کسٹمز حکام نے اضافی کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں 1ارب 5 کروڑ 96 لاکھ 25ہزار 992 روپے جمع کروانے کی ہدایت کردی ہے۔

خیال رہے توانائی سیکٹر کےعالمی تحقیقاتی ادارےریسٹاڈ انرجی نےرپورٹ جاری کی تھی ، جس میں کہا گیا تھا پاکستان کےسمندرسےممکنہ دریافت3بڑی متوقع تیل دریافتوں میں شامل ہیں جبکہ دیگر دو بڑی دریافتیں میکسیکو اور برازیل میں ہونے کا امکان ہے۔

یاد رہے ایگزون موبل تقریباً ایک دہائی بعد گزشتہ برس ہونے والے اس سروے کے بعد پاکستان مں واپس آئی ہے ، جس میں کہا گیا تھا کہ پاکستانی سمندر میں تیل کا بہت بڑا ذخیرہ ہوسکتا ہے، رواں سال جنوری میں کیکڑاون بلاک میں تلاش کا عمل شروع کیاگیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں