The news is by your side.

Advertisement

خیرپورمیں کم عمر دلہا کی موت، پوسٹ مارٹم رپورٹ سامنے اگئی

خیرپور: سندھ کے شہر خیرپور میں پولیس حراست میں کم عمر دلہا کی موت کے واقعے میں پیش رفت ہوئی ہے۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق دو روز قبل خیرپور میں کم عمری کی شادی پر گرفتار دلہا پولیس حراست میں انتقال کرگیا تھا، واقعے کی پوسٹ مارٹم رپورٹ سامنے آگئی۔

پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق دلہا ایاز کی عمر 14 سے 15 سال کے درمیان تھی، جاں بحق دلہا کے جسم پر تشدد کا کوئی نشان موجود نہیں ہے۔

ایس ایس پی خیرپور کا کہنا ہے کہ معائنہ سینئر سول جج کوٹ ڈیجی کی نگرانی میں کیا گیا ہے۔

دوسری جانب پی ٹی آئی رہنما خرم شیر زمان نے واقعے پر چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ سے نوٹس لینے کی اپیل کی ہے۔

خرم شیر زمان کا کہنا ہے کہ واقعے میں ملوث اہلکاروں کو فوری معطل کیا جائے، 2 لاکھ روپے رشوت نہ ملنے پر پولیس نے ایک گھر اجاڑ دیا۔

مزید پڑھیں: خیرپور: کم عمری کی شادی پرگرفتار دلہا انتقال کرگیا

انہوں نے کہا کہ سندھ کی غلام پولیس اچھے اہلکاروں پر بھی بدنما داغ ہے، سندھ پولیس کو آصف زرداری ملیشیا بنا کر ریکوری پر لگادیا گیا ہے۔

خرم شیر زمان نے کہا کہ بدامنی، پولیس گردی کے واقعات سندھ حکومت کی نااہلی ہے، ایس ایس پی خیرپور کے بیانات کی مذمت کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ پیرجوگوٹھ پولیس نے دو روز قبل کوٹ ڈینل محلے میں کم عمر بچوں کی شادی کرائے جانے پر کارروائی کی تھی، اس کارروائی میں دلہے اور دلہن کے والدین سمیت 20 باراتیوں کو گرفتار کیا گیا تھا جبکہ دلہے ایاز کو بھی پولیس اپنے ساتھ لی گئی تھی۔

گرفتار دلہا ایاز علی پولیس حراست میں انتقال کرگیا تھا، ورثا نے پولیس کو مورد الزام ٹھہراتے ہوئے کہا تھا کہ لاک اپ میں رہنے کی وجہ سے اسے سخت ذہنی اذیت کا سامنا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں