The news is by your side.

Advertisement

پارٹی سربراہ کے پاس اختیارنہیں کردارہونا چاہئے، ڈاکٹرخالد مقبول صدیقی

کراچی :  ایم کیو ایم پاکستان بہادرآباد گروپ کے سربراہ خالدمقبول صدیقی نے کہا ہے کہ چہروں، ناموں، لیڈروں کی تقسیم سے ایم کیو ایم تقسیم نہیں ہوگی، سربراہ کے پاس اختیار نہیں کردار ہونا چاہئے۔

ان خیالا ت کا اظہار انہوں نے کراچی میں میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ قوم کی تقسیم کے کسی عمل میں شریک نہیں ہوں گے، کارکنان کی تعداد بتارہی ہے کہ تقسیم کا تاثر غلط ہے، چہروں، ناموں، لیڈروں کی تقسیم سے ایم کیو ایم تقسیم نہیں ہوگی۔

خالد مقبول صدیقی کا کہنا تھا کہ اب پارٹی اصولوں آئین اور روایات کے مطابق کام ہوگا، اپنی قربانیاں گنوانے والے اپنے ماضی پر نظر ڈالیں، پارٹی سربراہ کے پاس اختیار نہیں بلکہ کردار ہونا چاہئے، آنے والا وقت ایم کیو ایم پاکستان کا ہے۔

واضح  رہے کہ اس سے قبل پی آئی بی کالونی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر فاروق ستارکا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم پی آئی بی میں واپس لوٹنے والی نگہت مرزا پر دباؤ ڈالنے اوردھکمياں دينے والے سینیٹرز کے خلاف خالد مقبول صدیقی سے کارروائی کا مطالبہ کرديا ہے، بيرسٹر فروغ نسيم اور بيرسٹر سيف نے ہمدردی کی آڑ میں نگہت مرزا پر دباؤ ڈالا۔

فاروق ستار نے کہا کہ زور اور زبردستی میں خواتین کو بھی نہیں بخشا جارہا، خالد مقبول سے میں اورہماری خواتین بھی بات کرینگی، جو ہوا وہ نہیں ہونا چاہیے تھا، ایسی صورتحال میں جو بڑے لوگ ہیں وہ مجھے فون کرتے۔

یاد رہے کہ گزشتہ دنوں سیاسی صورتحال پر گفتگو کرتے ہوئے خالد مقبول صدیقی کا کہنا تھا کہ مشکل گھڑی میں بہادر آباد اور پی آئی بی ایک ساتھ کھڑے ہیں، ایم کیو ایم کے علاوہ کسی اور پلیٹ فارم سے آئیں تو مہاجر قوم ووٹ کی خیرات نہ دے۔

مزید پڑھیں: فاروق ستار کہاں جائیں گے، انہیں بہادر آباد ہی آنا ہے، خالد مقبول صدیقی

انہوں نے کہا کہ مل جل کر آگے بڑھیں گے تو بیرونی قوت نہ جھکا سکتی ہے اور نہ ہی ختم کر سکتی ہے، حکومت، اسٹیبلشمنٹ اور اداروں کا نام استعمال ہونے کی تحقیقات کرے، تشدداور نفرت ہمارا طرز سیاست نہیں، جبر کی سیاست نہ کبھی کی ہے اور نہ قبول کریں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔  

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں