The news is by your side.

Advertisement

خواجہ آصف نے اپنی تاحیات نااہلی کافیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا

اسلام آباد : خواجہ آصف نے اپنی تاحیات نااہلی کافیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا، سینئر لیگی رہنما نے نااہلی کافیصلہ اورالیکشن کمیشن کانوٹیفکیشن کالعدم کرنے کی استدعا کرتے ہوئے کہا کاغذات نامزدگی میں بینک اکاؤنٹ غیرارادی ظاہرنہ کرسکا،  ہائی کورٹ نے قیاس آرائیوں پرمبنی فیصلہ دیا۔

تفصیلات کے مطابق خواجہ آصف نے تاحیات نااہلی کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کرلیا، خواجہ آصف نے درخواست میں موقف اختیار کیا کہ کاغذات نامزدگی میں بینک اکاؤنٹ غیرارادی ظاہرنہ کرسکا، بینک اکاؤنٹ میں ڈیکلیئرڈ اثاثوں کی اعشاریہ پانچ فیصدرقم تھی، رٹ دائر ہونے سے پہلے اکاؤنٹ اور اقامہ ظاہر کرچکا تھا۔

خواجہ آصف نے کہا کہ عدالت نےغیرفعال اکاؤنٹ کوظاہرنہ کرنابدنیتی قراردیا، فیصلے میں ملکی اوریو اے ای قوانین کومدنظرنہیں رکھا گیا، درخواست گزارکے رویے کو بھی سامنےرکھنا ہوتا ہے۔

درخواست گزارنے ہائی کورٹ سےحقائق چھپائے، کاغذات نامزدگی میں چھ اعشاریہ آٹھ ملین روپےکی بیرونی آمدن ظاہرکیا۔

خواجہ آصف نے درخواست میں مزید کہا کہ بیرون ملک کی ظاہرکردہ آمدن میں تنخواہ بھی شامل تھی،اسلام آبادہائیکورٹ نےقیاس آرائیوں پرمبنی فیصلہ دیا۔

درخواست میں مزید کہا گیا کہ رٹ2017 میں دائر ہوئی، 2015 میں اقامہ ظاہرکیا، خود سے اکاؤنٹ ظاہرکرنے کےعمل کوبدنیتی نہیں کہا جاسکتا، لہذا نااہلی کا فیصلہ ختم کیا جائے۔

یاد رہے کہ 26 اپریل کو وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی ہائی کورٹ نے وزیر خارجہ خواجہ آصف کو نااہل قرار دیا تھا۔


مزید پڑھیں : عدالت نے خواجہ آصف کو نااہل قرار دے دیا


سپریم کورٹ آرٹیکل 62 ون ایف کے تحت ہونے والی نااہلی کو تاحیات قرار دے چکی ہے، جس کے بعد نااہلی کے بعد خواجہ آصف اب نہ وزیر خارجہ رہے اور نہ وہ آئندہ انتخابات میں بھی حصہ نہیں لے سکتے۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے نااہلی کے فیصلے کے بعد سابق وزیر خارجہ اور مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف کی قومی اسمبلی رکنیت ختم کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا تھا۔

خیال رہے کہ خواجہ آصف کی نا اہلی کے لیے درخواست تحریک انصاف کے رہنما عثمان ڈار نے دائر کی تھی، درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا تھا کہ وزیر خارجہ دبئی میں ایک پرائیویٹ کمپنی کے ملازم ہیں جہاں سے وہ ماہانہ تنخواہ بھی حاصل کرتے ہیں۔ غیر ملکی کمپنی میں ملازمت کرنے والا شخص وزیر خارجہ کے اہم منصب پر کیسے فائز رہ سکتا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں