The news is by your side.

Advertisement

ساہیوال واقعہ: خواجہ آصف نے تحقیق کے لیے پارلیمانی کمیٹی بنانے کا مطالبہ کر دیا

اسلام آباد: سابق وزیرِ خارجہ خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ راؤ انوار کے خلاف کارروائی ہوتی تو پولیس والوں کو کچھ احساس ہوتا۔

وہ قومی اسمبلی اجلاس میں اظہارِ خیال کر رہے تھے، خواجہ آصف نے کہا کہ بے گناہوں کے خون سے ہولی نہ کھیلی جائے، اس کی ذمہ داری حکمرانوں پر آ جاتی ہے۔

راؤ انوار کے خلاف کارروائی ہوتی تو پولیس والوں کو کچھ احساس ہوتا۔

خواجہ آصف

مسلم لیگ کے رہنما کا کہنا تھا کہ جس انصاف کے دعوے کیے گئے، وہ کر کے دکھایا جائے۔

خواجہ آصف نے کہا ’محافظ قاتل بن گئے ہیں، لیکن تاویلیں پیش کی جا رہی ہیں، ہر طرف کنفیوژن ہے، ایوان کو اختیار دیا جائے کہ ساہیوال واقعے کو خود سے دیکھے۔‘

رہنما ن لیگ نے مطالبہ کیا کہ ساہیوال واقعے کی تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیٹی بنائی جائے۔

انھوں نے وزیرِ مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ انھوں نے کہا تھا ملزم پکڑے نہ جائیں تو حکمران ذمہ دار ہوتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  عوام ساہیوال واقعے کے حقائق جاننا چاہتے ہیں: شہباز شریف

خواجہ آصف نے کہا کہ ماضی میں شہباز شریف کو بھی ایسے کیسز میں ملزم قرار دے کر استعفے کا مطالبہ کیا گیا۔

ان کا کہنا تھا ’عوام کے تحفظ کے لیے ہم ایک ہو جائیں تو لوگوں کو بھی اعتماد ہوگا، دہشت گردی ختم کرنے والے خود دہشت گرد بن گئے ہیں، ساہیوال واقعہ تباہی کی نشانی ہے، سی ٹی ڈی اہل کاروں پر دہشت گردی کا مقدمہ چلایا جائے۔‘

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں