The news is by your side.

Advertisement

اوآئی سی اجلاس: بھارتی وزیر خارجہ کو مدعو کرنے پر پاکستان بائیکاٹ کرے، خواجہ آصف

قومی سلامتی کاایشوہےپارلیمنٹ کامشترکہ اجلاس آج ہی بلائیں

اسلام آباد : سابق وزیردفاع خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ قومی سلامتی کامعاملہ ہےپارلیمنٹ کامشترکہ اجلاس آج ہی بلایاجائے، بھارتی وزیر خارجہ کو او آئی سی رابطہ گروپ میں بطور مہمان اعزازی مدعو کرنا پاکستان کی سفارتی ناکامی ہے، ہمیں اجلاس کابائیکاٹ کرنا چاہئے۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف نے قومی اسمبلی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا اوآئی سی کےاجلاس میں سشماسوراج کو بلایاگیا ہے، او آئی سی میں بہت عجیب بات ہے جو بھارتی وزیرخارجہ کو بلایاگیاہے، سفارتی سطح پر ہماری ناکامی ہے، جو سشماسوراج کو او آئی سی میں بلایاگیا۔

خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ ہم پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں اس ملک کا چپے چپے کی حفاظت کریں گے، ہمیں اپنے اختلافات کو پس پشت ڈال کرقوم کو اعتماد میں لے کر بھارت کو پیغام دیناچاہیے، حکومت کہتی تھی دوتین دن میں خوشخبری آئےگی یہ خوشخبری آگئی، اس طرح خارجہ پالیسی نہیں چلتی جس طرح حکومت چلارہی ہے۔

ہمارے اختلافات حکومت چلانے کے انداز پر ہیں، پاکستان کیلئے سب ایک ہیں

سابق وزیر خارجہ نے کہا مسئلہ کشمیر کے معاملے پر ہم سب ایک ہیں، کشمیریوں کے مسائل پر ہمیں ہچکچانا نہیں چاہیے، ہمارے اختلافات حکومت چلانے کے انداز  پر  ہیں، پاکستان کیلئے سب ایک ہیں۔

مسلم لیگ ن کے رہنما نے مطالبہ کیا قومی سلامتی کاایشوہےپارلیمنٹ کامشترکہ اجلاس آج ہی بلائیں، یہ اتحادکاوقت ہے اس معاملے پر  سیاست نہ کریں، آج ہاؤس کا تقدس رکھیں، قومی ضرورت کےتحت پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلائیں۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارت کشمیریوں کا خون بہارہاہے اوراوآئی سی میں سشماسوراج کو بلایاگیا، سشماسوراج کواوآئی سی اجلاس میں بلاناہماری توہین ہے، ہمیں اجلاس کابائیکاٹ کرنا چاہئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں