The news is by your side.

Advertisement

کراچی کے وسائل کی بات کریں تو سندھ خطرے میں آجاتا ہے، خواجہ اظہارالحسن

کراچی : ایم کیو ایم کے رہنما خواجہ اظہارالحسن نے کہا ہے کہ کراچی کو وسائل دینے کی بات کریں تو سندھ خطرے میں آجاتا ہے، صوبے کو خطرہ یہاں کے حکمرانوں سے ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ کمیٹی کمیٹی کا کھیل کراچی کے مسائل کا حل نہیں، کراچی کو بنانا ریپبلک بنا کررکھ دیا گیا، اس کو وسائل دینے کی بات کریں تو سندھ کا وجود خطرے میں آجاتا ہے، ایسا لگ رہا ہے کہ کراچی کے معاملے کو ذاتی انا کا مسئلہ بنالیا گیا ہے۔

خواجہ اظہار نے کہا کہ کمیٹی کمیٹی کا کھیل کراچی کے مسائل کا حل نہیں، کراچی کو بنانا ریپبلک بنا کررکھ دیا گیا، اس کو وسائل دینے کی بات کریں تو سندھ کا وجود خطرے میں آجاتا ہے، کراچی لاڑکانہ اور لاڑکانہ موہن جودڑو بن گیا، سندھ کو خطرہ سندھ کے حکمرانوں سے ہے۔

انہوں نے ایم کیو ایم کی جانب سے اے پی سی کراچی کانفرنس بلانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ کراچی کانفرنس کے ذریعے مقامی لوگ کراچی کامقدمہ پیش کرینگے، کراچی میں رہنے والوں کو کراچی کانفرنس میں مدعو کیا جائے گا، کراچی کا مسئلہ حل ہوگا تو عوام اور وفاق بھی مضبوط ہوگا، سندھ حکومت کانام نہیں لے سکتا یہ تو پہلے ہی مضبوط ہیں۔

متحدہ رہنما نے کہا کہ ہم سمجھتے تھے 18ویں ترمیم کے بعد صوبے مضبوط ہوں گے، ہمیں کیا معلوم تھا کہ 18ویں ترمیم سے چند لوگ مضبوط ہوں گے، وفاق سے محاذ آرائی سندھ حکومت کی الیکشن مہم ہے، اٹھارہویں ترمیم کے نام پر ہمارے ساتھ دھوکہ ہوا ہے لوگوں نے اپنے محل بھرے۔

خواجہ اظہار الحسن کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ سندھ کی پریس کانفرنس دیکھ کر افسوس ہوا وہ فاق سے محاذ آرائی بند نہیں کرنا چاہتے، وفاق سے پیسے مانگ رہے ہیں خود10سال سے ہم پر مسلط ہو کر کیا کررہے ہیں، کراچی کا حل اس شہر کے رہنے والوں سے نہیں پوچھیں گے تو حل نہیں نکلے گا۔ ورلڈبینک کا کہنا ہے کراچی کا مسئلہ بہت سنگین ہوچکا ہے، پیسہ ،وسائل ،اختیار آپ کے پاس ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں