The news is by your side.

Advertisement

نیب کو کسی اور کے حکم پر سیاست دانوں کی کردار کشی سے گریز کرنا چاہیے: سعد رفیق

اسلام آباد: وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ آئین وقانون کے ہر داعی کے چہرے پر سیاہی ملی جارہی ہے، نیب کو کسی اور کے حکم پر کردار کشی سے گریز کرنا چاہیے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے نیب کی جانب سے جاری کردہ  اعلامیے پر ردعمل دیتے ہوئے کیا، اعلامیے میں وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق سمیت دیگر اہم شخصیات پر بد عنوانی میں ملوث ہونے کا انکشاف کیا گیا ہے۔

قومی احتساب بیورو کا اہم اجلاس، سعد رفیق، نواب وسان اور دیگر کے خلاف تحقیقات کا حکم

خواجہ سعد رفیق کا کہنا ہے کہ یہ سارا کھیل ہمیں گندا کر کے عوام کو ہم سےدور کرنا ہے، ہمیں رسوا کرنے اور متنازع بنانے کے لئے ماحول بنایا جارہا ہے، اگر میں بدعنوان ہوں تو پھر کوئی دیانت دار نہیں، نیب حکام کردار کشی پہلےکرتے ہیں جبکہ جانچ پڑتال بعد میں ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیب کا ادارہ مشرف نے مخالفین پر دباؤ ڈالنے کے لئے بنایا، کچھ لوگ مجھ سے ریلوے کی حالت بدلنے کا کریڈٹ بھی چھیننا چاہتے ہیں، یہ لوگ چھپ کر حملے کرتے ہیں یہ کہاں کا قانون اورحب الوطنی ہے؟ تحقیق اورجانچ پڑتال ضرور کریں تذلیل نہ کریں۔

چار سال میں ہمیں سکون سے حکومت نہیں کرنی دی گئی، خواجہ سعد رفیق

وزیر ریلوے کا کہنا تھا کہ ہم قومی ادارے کو پاؤں پر کھڑے کرتے ہیں لیکن آپ ہم سے بدلہ لینے کے چکر میں انہیں برباد کرنے پر تلے ہیں، روز دھمکیاں وصول کر کےجذب کرتاہوں اور خاموشی سے مسکرا دیتا ہوں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ترکی بہ ترکی جواب دینےکےلئے اکسایا جا رہا ہے، قوم کی خدمت کاصلہ دیں یا نہ دیں لیکن کم از کم اس کی سزا تو نہ دیں۔

وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کے الزامات پر نیب کا ردعمل

خواجہ سعد رفیق کی جانب سے قومی احتساب بیورو (نیب) پر سنگین الزامات سے متعلق نیب کا ردعمل سامنے آگیا۔

ترجمان نیب کا کہنا ہے کہ قومی احتساب بیورو کسی کی ہدایت پر کوئی کارروائی نہیں کررہا، پاکستان میں کوئی طاقت ایسی نہیں جونیب کو کسی بھی قسم کی کارروائی کے لیے مجبور کرے، ادارہ صرف قانون کی حکمرانی پرعمل پیرا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں