The news is by your side.

Advertisement

نازیبا کلمات پر خواجہ آصف کی معذرت، اپوزیشن کا احتجاجاً واک آؤٹ

اسلام آباد: وفاقی وزیر دفاع خواجہ آصف نے پاکستان تحریک انصاف کی رہنما شیریں مزاری کے خلاف نازیبا الفاظ کہنے پر معذرت کرلی۔ تاہم قومی اسمبلی کے اجلاس میں اس بات پر گرما گرم بحث ہونے کے بعد اپوزیشن نے اجلاس سے واک آؤٹ کردیا۔

وفاقی وزیر دفاع خواجہ آصف نے آج اجلاس میں اپنا تحریری معافی نامہ اسپیکر قومی اسمبلی کو بھجوایا جس میں انہوں نے کل کے واقعے پر غیر مشروط معافی مانگی۔ اسپیکر نے ان کا معافی نامہ ایوان میں پڑھ کر سنایا تاہم شیریں مزاری نے وزیر دفاع کی تحریری معافی مسترد کردی۔

asif letter

شیریں مزاری سمیت دیگر کئی ارکان اسمبلی نے مطالبہ کیا کہ وزیر دفاع خواجہ آصف ایوان میں آکر معافی مانگیں۔

بعد ازاں خواجہ آصف قومی اسمبلی کے اجلاس میں شریک ہوئے اور اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز ایوان میں جو کچھ ہوا وہ نہیں ہونا چاہیئے تھا۔ ان کا مقصد ایوان کا ماحول خراب کرنا نہیں تھا۔ ان کی تقریر کے دوران آوازیں کسی گئیں اور یہ اسی کا فطری ردعمل تھا۔

انہوں نے کہا کہ صنفی امتیاز کی بات کی جائے، اور پھر صنف ہی کو بنیاد بنا کر اپنی حیثیت کا فائدہ اٹھایا جائے تو یہ زیادتی ہے۔

شیریں مزاری نے ایک بار پھر ان کی معذرت مسترد کرتے ہوئے کہا کہ میرا نام لے کر میری ذات پر حملہ کیا گیا چنانچہ معافی بھی نام لے کر مانگی جائے۔ ایسی معافی ایوان میں موجود خواتین سمیت کسی کو قبول نہیں۔

خواجہ آصف نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ میری تقریر کا دوبارہ جائزہ لیا جائے، اگر میں نے نام لے کر کہا ہو تو میں نام لے کر معافی مانگنے کو تیار ہوں۔

اس موقع پر شاہ محمود قریشی نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ خواجہ آصف کے الفاظ سے شیریں مزاری کا دل دکھا۔ اگر ان کے نام لے کر معافی مانگنے سے انہیں تسلی ہوتی ہے تو اسے انا کا مسئلہ نہیں بنانا چاہیئے۔

پیپلز پارٹی کی رکن نفیسہ شاہ نے کہا کہ صنف کی بنیاد پر بے عزت کرنا پورے ہاؤس کی بے عزتی ہے۔ خواجہ آصف نے شیریں مزاری کا نام نہیں لیا لیکن اشارہ شیریں مزاری کی طرف تھا۔

اس موقع پر اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق نے اس موضوع پر مزید اظہار خیال سے روک دیا اور معاملے کو ختم کرنے کا کہا جس پر اپوزیشن ارکان نے احتجاجاً ایوان سے واک آؤٹ کر دیا۔

واضح رہے کہ قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران وفاقی وزیر دفاع اور پانی و بجلی خواجہ آصف کی جانب سے تحریک انصاف کی رہنما شیریں مزاری کو نازیبا لفظ سے مخاطب کرنے پر اسمبلی میں ہنگامہ آرائی شروع ہوگئی۔

خواجہ آصف کے نازیبا الفاظ سے پکارنے پر شیریں مزاری نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا تھا کہ خواجہ آصف میں اگرا ذرا بھی شرم و حیا ہوتی تو انہیں پتہ ہوتا کہ خواتین سے بات کیسے کی جاتی ہے لیکن وہ ایک بے شرم اور بے حیا انسان ہیں۔ میری آواز ان سے بلند تھی۔

خواجہ آصف کے نازیبا کلمات کو مختلف سیاسی رہنماؤں کی جانب سے بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں