site
stats
پاکستان

نوازشریف کومشورہ دیا تھا پارلیمنٹ سے باہر نہ جائیں،خورشیدشاہ

اسلام آباد : قائد حزب اختلاف خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ نوازشریف کو پہلے بھی مشورہ دیا تھا کہ پارلیمنٹ سے باہر نہ جائیں، پاناما پر ٹی او آرز بنانے کا کہا توحکومت نہیں مانی تھی ، پاکستان کو برما کے سفیر کو بھی بلا کر احتجاج کرنا چاہئے۔

تفصیلات کے مطابق اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف نے پہلی بار میرا مشورہ نہیں مانا ،نوازشریف کو پہلے بھی مشورہ دیا تھا کہ پارلیمنٹ سے باہر نہ جائیں، پاناما پر ٹی او آرز بنانے کا کہا توحکومت نہیں مانی تھی۔

آئی جی سندھ کے حوالے سے خورشیدشاہ کا کہنا تھا کہ آئی جی سندھ کا مسئلہ گورننس کا ہے ، آج اےڈی خواجہ ہے تو کل کوئی اور آئی جی ہوگا، پنجاب میں 18گریڈ کا بھی افسر سیکریٹری کے عہدے پر ہے، سندھ میں ہر معاملے کو سیاست کی نذر کیاجارہاہے،خورشیدشاہ

انھوں نے کہا کہ ادارے اپنی حد میں رہ کر کام کریں تو سب ٹھیک رہتا ہے، ادارے حد کا تعین کرسکتے ہیں ڈائریکریشن نہیں دے سکتے۔

برما کی صورتحال پر قائد حزب اختلاف کا کہنا تھا کہ پاکستان کو برما کی صورتحال پر اپنا وفد بنگلادیش بھیجنا چاہئے اور پاکستان کو برما کے سفیر کو بھی بلا کر احتجاج کرنا چاہئے۔

خورشیدشاہ نے مردم شماری کے نتائج سے متعلق کہا کہ مردم شماری میں چھوٹے چھوٹے ٹیکنیکل مسائل ہیں ، مردم شماری پر17ارب خرچ ہوئے،معاملے کو ٹھیک کیاجاسکتا ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top