The news is by your side.

Advertisement

آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدہ نیوکلیئر معاہدہ نہیں، پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے: خورشید شاہ

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے کہا ہے کہ آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدہ کوئی نیوکلیئر معاہدہ نہیں ہے، اسے پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خورشید شاہ نے کہا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدہ پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے، پارلیمنٹ میں نہیں لاتے تو اس کا مطلب ہے کہ آپ پارلیمنٹ کو کچھ نہیں سمجھتے۔

خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ پہلے بجٹ آئی ایم ایف کی مشاورت سے بنتا تھا، اب بجٹ آئی ایم ایف خود بنا رہی ہے، یہ تبدیلی ہے، ایک طرف عمران خان تیل اور گریس نکلنے کے دعوے کر رہے ہیں، دوسری طرف مشیر کہہ رہا ہے 20 کروڑ ڈالر خرچ کر کے بھی کچھ نہیں نکلا۔

پی پی رہنما نے مہنگائی کے حوالے سے طنز کرتے ہوئے کہا کہ عوام کا تیل اتنا نکل گیا ہے کہ یہ ایکسپورٹ بھی ہو سکتا ہے، ڈالر کے اوپر آنے سے قرضوں کا حجم بھی بڑھ گیا ہے، وزیر اعظم نے معیشت کو ایسی جگہ پہنچا دیا جو سب کے لیے چیلنج ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  بلاول بھٹو کی دعوت افطار، اہم سیاسی رہنماؤں کی شرکت

ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کے لیے ایک پیج پر ہونے کے علاوہ کوئی راستہ نہیں رہا، موجودہ حالات میں تمام سیاسی جماعتوں کو سر جوڑ کر بیٹھنا ہوگا، حکمرانوں کا ایجنڈا عوام کو تباہ و برباد کر کے حکومت کرنے کا ہے۔

خورشید نے کہا کہ ڈالر کی اڑان ملکی معیشت پر ایک بہت بڑی ضرب ہے، معیشت کی خراب صورت حال حکومت کی ناکامی ہے، اسد عمر اپنی ناکامی کا اظہار کر چکے ہیں۔

خیال رہے کہ اپوزیشن جماعتیں‌ حکومت کے خلاف احتجاج کے سلسلے میں‌ اکھٹی ہو رہی ہیں، اس سلسلے میں‌ گزشتہ روز بلاول بھٹو کی جانب سے افطار ڈنر بھی دیا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں