The news is by your side.

Advertisement

لیگی وزراء عدالت پردباؤ ڈالنے کی کوشش کررہے ہیں، خورشید شاہ

اسلام آباد : پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما اور قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ حکومتی وزراء اپنے بیانات سے عدلیہ پر دباؤ ڈالنے کی کوشش کر رہے ہیں، عدالت عظمیٰ اورپارلیمنٹ میں بہت فرق ہے، اعلیٰ عدلیہ جارحانہ بیانات کاسختی سے نوٹس لے، لیگی رہنما پی پی قیادت کیخلاف سوچ سمجھ کر بیان دے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ عدالت پراندر سے حملے کے بعد اب باہر سے بھی حملے کی کوشش کی جارہی ہے، حکومتی وزراء کے بیانات توہین عدالت کے زمرے میں آتے ہیں اس لیے اعلیٰ عدلیہ کو ان کے جارحانہ بیانات کاسختی سے نوٹس لیناچاہئے۔

سید خورشید شاہ نے کہا کہ ہم نےملک کو آئین اورقانون کےتحت چلاناہے، شخصیات اورخواہشات کےمطابق کے مطابق ملک کونہیں چلایا جاتا، انصاف کا حصول امیر اورغریب عوام اورحکمران کیلئے برابر ہونا چاہئے، کمزورکیلئےایک قانون اورطاقت ور کیلئے دوسرا قانون نہیں ہوناچاہیے۔

انہوں نے کہا کہ عدالت کی دہلیز کے باہرانصاف کے برعکس دعوے کئے جارہے ہیں، عدالت عظمیٰ اورپارلیمنٹ میں بہت فرق ہے، پارلیمنٹ سیاست کا گھر ہے اوراس کے اندراور باہر سختی نرمی ہوسکتی ہے، لیکن عدالت عظمیٰ کے تقدس میں اس کے سامنے سیاسی بیان بازی پرپابندی ہونی چاہئے۔

سید خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ تاریخ شاہد ہے کہ انصاف اورجمہوریت کی راہ میں بڑی قربانیاں دیں، ہم نے کبھی عدالتوں کو نشانہ بنایا اورنہ ہی پارلیمنٹ کی تذلیل کی، مسلم لیگ ن کے رہنما پیپلزپارٹی کی قیادت سے متعلق سوچ سمجھ کربیان بازی کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں