site
stats
پاکستان

مجھے ہٹانے کے لئے ایم کیو ایم اور پی ٹی آئی متحد ہورہی ہیں ، خورشید شاہ

Khursheed shah

اسلام آباد : قائد حزب اختلاف خورشید شاہ اپوزیشن جماعتوں پر برس پڑے اور کہا کہ مجھے ہٹانے کے لئے ایم کیو ایم اور پی ٹی آئی متحد ہورہی ہیں، عمران خان کے ہر اقدام نے حکومت کو مضبوط کیا۔

تٖفصیلات کے مطابق قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن لیڈر ہٹانے سے متعلق کوششیں جاری ہیں، یہ ایک نئی روایت بن رہی ہےجس سےمجھےاعتراض نہیں، میرےعلاوہ کوئی اوراس عہدےکےلیےاہل ہےتواچھی بات ہے، ایمانداری سےسوا4سال گزارےکارکردگی پرفخرہے، بہت سے لوگوں کو بلاکر سمجھایا کہ سیاست اورجمہوریت کیا ہوتی ہے۔

خورشید شاہ نے کہا کہ اپوزیشن لیڈرکی تبدیلی کیلئے پی ٹی آئی جمہوری راستہ اپنارہی ہے، پی ٹی آئی کاجمہوری راستہ اپنا اچھی بات ہے، اچھی روایت پڑے گی، چیئرمین نیب کیلئے پارلیمنٹ کا راستہ اپنایا جاتا ہے، اپوزیشن اورحکومت کی مشاورت سے چیئرمین نیب تعینات ہوتا ہے، مشاورت کے بعد ہی نئے چیئرمین نیب کا فیصلہ کیا جاتا ہے، مشاورت نہ ہونے کی صورت میں12رکنی کمیٹی میں جانا ہوتا ہے۔

پی ٹی آئی پر تنقید کرتے ہوئے پیپلز پارٹی رہنما نے کہ کہ پی ٹی آئی نے ہمیشہ کہا کہ اپوزیشن لیڈر نے نوازشریف کا ساتھ دیا، پی ٹی آئی نے ایم کیوایم پاکستان کے خلاف شروع سے الگ رویہ اپنایا، پی ٹی آئی ایم کیوایم پاکستان کے پاس جانے سے پہلے معذرت تو کرلے، پی ٹی آئی نے شروع سے ایم کیوایم پاکستان کی دل آزاری کی ہے، پی ٹی آئی کم سےکم اس دل آزاری کی معافی مانگے کر ان کے پاس جائے۔


مزید پڑھیں : ملک کے حالات اچھے نہیں، اداروں میں ٹکراؤ ہوچکا ہے، خورشید


انکا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ مضبوط ہوگی اورجمہوریت چلتی رہے گی، کچھ جماعتوں کی کوشش ہے جمہوریت کو کمزور،پارلیمنٹ کوسبوتاژ کیاجائے، نوازشریف کو واپس آنا چاہیے اور عدالتوں کا سامناکرنا چاہیے، جو سیاستدان کیسز سے بھاگتا ہے، تاریخ اسے بھول جاتی ہے، میرامشورہ ملک کے نظام کیلئے ہوتا ہے، بہت کچھ سیکھا ہے ہمیشہ مشورہ ملک کے لیے دیتا ہوں۔

خورشید شاہ نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر کی تبدیلی کی ضرورت کیوں ہے پی ٹی آئی سےپوچھیں، اپوزیشن لیڈر توقوم کیلئےکھلی کتاب ہوتاہے، جو4سال میں اپنا صوبہ نہیں سنبھال سکتا وہ کیا ملک کو دے گا، اپوزیشن لیڈرکو ہٹانا چاہتے ہیں تو ہٹادیں کس نے روکا ہے، ہم نےانتخاب بل میں ترمیم کی ڈٹ کرمخالف کی ہے، ایم کیوایم پاکستان نے انتخاب بل میں ترمیم کی حمایت کی۔

انکا مزید کہنا تھا کہ ملک کے اندرونی اوربیرونی حالات بگڑے ہوئےہیں، ایسے حالات کبھی نہیں دیکھے کہ بیرون ممالک سے خطرہ ہو، بھارتی اخبارمیں آیا ہے طالبان کے پیچھے را کا ہاتھ ہے، پاکستان کو بھارت کا مکرو چہرہ دنیا کے سامنے بے نقاب کرنا چاہیے، ہرشخص اور ملک کےاپنے اپنے مفادات ہیں، پیپلزپارٹی کا پارلیمنٹ کے اندراور باہرمؤقف ایک ہی ہے۔


مزید پڑھیں :  مسلم لیگ ن کو سپریم کورٹ کا فیصلہ ماننا پڑے گا‘ خورشید شاہ


عمران خان کے قبل از وقت انتخابات کے مطالبے کے حوالے سے اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ عمران خان کوہر چیز میں جلدی ہے، عمران خان کو قبل ازوقت الیکشن کی ضرورت کیوں ہے نہیں معلوم، پی ٹی آئی خیبرپختونخوا میں آدھی سیٹیں بھی جیتی تو الیکشن جیت جائے گی، ٹکراؤ وہ پیدا کر رہے ہیں، پیپلز پارٹی نہیں، میں نے اپوزیشن کو مضبوط کرکے کھڑاکیا، پیپلزپارٹی کےپاس پارلیمنٹ میں47ارکان کی اکثریت ہے۔

پیپلز پارٹی رہنما نے کہا کہ سیاسی جماعتوں سےچیئرمین نیب کیلئےناموں کامنتظرہوں، عارف علوی،شفقت محموداورشیریں مرازی سےمشاورت کی، اےاین پی،سراج الحق،آفتاب شیرپاؤ سے نام دینےکیلئے کہا ہے، چیئرمین نیب پرنوازشریف سے 20منٹ تک مشاورت ہوئی تھی، سیاسی جماعتیں نام دیں گی تو وزیراعظم کوآگاہ کردوں گا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top