The news is by your side.

Advertisement

سندھ حکومت کا آئینی حق ہے جہاں اور جب چاہے رینجرز کو اختیار دے،خورشید شاہ

ٹنڈو محمد خان : قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے کہا ہے کہ سندھ حکومت کو اختیار حاصل ہے کہ جہاں بہتر سمجھے رینجرز کو اختیارات دے اور ایسا کرنے پر کوئی آئینی انحراف نہ ہو گا۔

تفصیلات کے مطابق قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے ٹنڈو محمد خان میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ رینجرز کے‌حوالے سے سندھ حکومت جو بھی اقدام کرے گی وہ آئین میں رہتے ہوئے کرے گی،سندھ حکومت کا آئینی حق ہے کہ جہاں بہتر جانے رینجرز کو اختیار دے،صوبائی حکومت کی کال پر رینجرز اس جگہ امن عامہ کے قیام کے لیے کارروائی کر سکتی ہے۔

انہوں نے وضاحت دی کہ حکومت مخالف تحریکوں کا متحدہ اپوزیشن سے کوئی تعلق نہیں ہے،اگر کوئی حکومت مخالف تحریک کا آغاز کرنا چاہتا ہے تو وہ اُس کی اپنی انفرادی سیاسی حکمت عملی ہو گی،متحدہ اپوزیشن کا اس تحریک سے کوئی تعلق نہیں تا ہم اگر حکومت نے ہٹ دھرمی کی ریت جاری رکھی تو متحدہ اپوزیشن کے پاس بھی کئی آپشن ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ پاناما لیکس معاملے پر اب تک تین ممالک کے وزیر اعظم مستعفی ہو چکے ہیں،دنیا بھر میں پانامہ لیکس میں نام آنے والوں کے خلاف عوامی دباؤ بڑھتا جا رہا ہے اس لیے ہم چاہتے ہیں کہ پاکستان میں بھی پاناما لیکس معاملے کا حل نکالا جائے ،اس کاحل نکالنا حکومت کی اخلاقی ذمہ داری ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاناما لیکس کے معاملے پر 8میٹنگز ہوچکی ہیں لیکن کوئی نتیجہ نہیں نکلا ،حالیہ میٹنگ میں نئی قانون سازی کرنے کا فیصلہ ہوا ہے حکومت کی سست روی سے یہ معاملہ گھمبیر صورت اختیار کرتا جارہا ہے جس کے سدباب کے لیے فوری اور دیرپا اقدام اُٹھانے کی ضرورت ہے۔

آخر میں اپوزیشن لیڈر اور پاکستان پیپلز پارٹی کے سینیئر رہنما خورشید شاہ نے آزاکشمیر انتخابات میں اُن کی جماعت کی ناکامی پر موقف اپنایا کہ آزاد کشمیر الیکشن میں ہمیشہ وہی جماعت کامیاب ہوتی ہے جو اسلام آباد کی بھی حکمران جماعت ہو۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں