The news is by your side.

Advertisement

سڑک پر بات اس وقت ہوتی ہے جب آمریت ہوتی ہے: خورشید شاہ

اسلام آباد: اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ اپوزیشن کو پارلیمنٹ میں بولنے کی اجازت نہیں۔ حکومت چاہتی ہے کہ ہم پارلیمنٹ سے باہر جائیں۔ سڑک پر بات تب ہوتی ہے جب آمریت ہوتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اور پیپلز پارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں صدر مملکت کے خطاب کا بائیکاٹ کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ فاٹا کے عوام کی دل آزاری کی گئی، لیکن صدر نے نوٹس نہیں لیا۔

انہوں نے کہا کہ فاٹا کے عوام کے ساتھ مذاق کیا گیا۔

مزید پڑھیں: پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے صدر کا خطاب

خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ سیاست میں انتشار پھیلا ہوا ہے۔ ہمیں پارلیمنٹ کے اندر بولنے کی اجازت نہیں ہے۔ کوشش ہے اپنے مسائل سڑک کے بجائے پارلیمنٹ میں لائیں۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ حکومت چاہتی ہے کہ ہم پارلیمنٹ سے باہر جائیں۔ سڑک پر بات تب ہوتی ہے جب آمریت ہوتی ہے۔

یاد رہے کہ کچھ دیر قبل صدر مملکت ممنون حسین نے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کیا جس کے دوران اپوزیشن نے شور شرابہ کیا اور گو نواز گو کے نعرے لگائے۔

بعد ازاں اپوزیشن نے اجلاس سے واک آؤٹ بھی کیا۔

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں وزیر اعظم، مسلح افواج کے سربراہان، وزرائے اعلیٰ، گورنرز اور سفارت کاروں نے شرکت کی۔


Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں