The news is by your side.

Advertisement

جمہوریت جائے گی نہ نوازشریف، البتہ تمہاری بدنیتی ضرورجائے گی، خواجہ سعد رفیق

لاہور : وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ جے آئی ٹی بنانے کے مقاصد کچھ اورتھے لیکن کام کچھ اورشروع کردیا گیا ہے۔

وہ لاہور میں کارکنان کے اجتماع سے خطاب کر رہے تھے انہوں نے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا نام لیے بغیرکہا کہ جمہوریت کے دشمنوں ، وزیراعظم نہ بننے پرجلن کے شکار لوگوں سن لو!!! جےآئی ٹی غلطی کرے گی تو تنقید بھی ہوگی۔

عام آدمی کی زبان بند نہیں کی جا سکتی 


انہوں نے کہا کہ ہم خاموش رہ سکتے ہیں لیکن عام آدمی کی زبان بند نہیں کی جاسکتی لیکن میں یہاں موجود نوجوانوں سے اپیل کرتا ہوں کہ صبر کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑیں اوراپنی قومی ذمے داری کا احساس کریں اوراپنے کسی بھی رویے سے منفی پیغام نہ جانے دیں۔

الزام تراشی کی سیاست کرنا نہیں چاہتے 


خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ ہمارے پاس عمران خان پرالزامات لگانے کے100راستے ہیں لیکن ہماری الزام لگانے کی روش نہیں لیکن صرف آپ کو جواب دیتے ہیں اس لیے کہتا ہوں کہ اگر نفرت کی سیاست کرنی ہے تو پہلے ماضی کی سیاست بھی دیکھ لو۔

مقدمہ ہم جیتےتومٹھائیاں بھی ہم ہی تقسیم کریں گے 


انہوں نے کہا کہ اگرعدالت سے ہم مقدمہ جیتیں گے تومٹھائیاں بھی ہم ہی کھائیں گے اس پہ کسی کوئی اعتراض نہیں ہونا چاہیئے اور جلد اپنی فتح اور سرخروی کے لیے جشن منائیں گے تو جلنے والے اور جل جائیں گے اورکسی کو منہ دکھانے کے قابل نہیں رہیں گے۔

جے آئی ٹی پر اعتراض ہمارا حق ہے 


وفاقی وزیرریلوے نے استفسار کیا کہ جب ہمیں لگا انصاف نہیں ہورہا تو بولیں نہ توکیا کریں کیوں جے آئی ٹی کوئی سپریم کورٹ نہیں محض تحقیقاتی ٹیم ہے اس لیے اگرکوئی اعتراض ہوگا تو وہ سب کے سامنے لانا ہمارا بنیادی حق ہے اسی طرح ہمیں الہام نہیں ہوا تھا کہ واٹس ایپ پرجےآئی ٹی بن جائے گی۔

مشرف نہیں جو کمر درد کا بہانہ بنا کر بھاگ جائیں 


خواجہ سعدرفیق نے کہا کہ عدالت میں پیشی پر مشرف کی کمرمیں تکلیف شروع ہوجاتی تھی اور وہ گاڑی عدالت کے بجائے اسپتال کی جانب موڑ لیتے ہیں اور پھرعلاج کا بہانہ بنا کرملک سے فرار ہوجاتے ہیں جب ایک صاحب مری کی پہاڑیوں پر یاترا کرنے چلے جاتے ہیں۔

عمران خان اداروں پر حملے کرواتے ہیں 


انہوں نے کہا کہ عمران خان الیکشن کمیشن کوروزگالیاں دیتے ہیں، پی ٹی وی پر حملہ کرواتے ہیں، سپریم کورٹ کی دیواروں پر کپڑے لٹکائے جاتے ہیں الیکشن کمیشن میں پارٹی فنڈنگ کیس سے غائب رہتے ہیں منی ٹریل سامنے نہیں لاتے اداروں پر حملہ کرتے ہیں دارالحکومت پر قبضہ کرنےکی دھمکیاں دیتے لیکن انہیں کچھ نہیں کہا جاتا۔

کچھ لوگ جمہوریت کو چلتا کرنا چاہتے ہیں 


خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ کچھ لوگ چاہتے ہیں کہ ملک سے جمہوریت کو چلتا کرو، کچھ لوگ چاہتے انتخاب نہ ہوں اورکچھ لوگوں کے بین الااقوامی جب کہ کچھ کا مقامی ایجنڈا ہے لیکن ہم بتا دینا چاہتے ہیں کہ ملک میں انتشار پیدا نہیں ہونے دیں گے اور نہ جمہوریت کی بساط لپیٹنے دیں گے۔

ریلوے نے 40 ارب کما کر دیئے 


انہوں نے کہا کہ اس سے قبل ریلوے کا محمکہ بوجھ تھا لیکن اس ادارے کی باگ دوڑ سنبھالی تواس ادارے نے 40 ارب کما کر دیے ہیں اور ریلوے میں 2 کروڑمسافروں کا اضافہ ہوا جب کہ اب ریلوے کے پاس ایک دن نہیں 20 دن کا ایندھن کا ذخیرہ موجود ہے۔

شعر پڑھے اور نعرے لگوائے 


اس موقع پر خواجہ سعد رفیق نے عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ معروف شعر پڑھا کہ وہ مرد نہیں جو ڈر جائے حالات کے خونی منظرسے جس دورمیں جینامشکل ہو اس دورمیں جینا لازم ہے اور اجتماع میں نعرے کی صورت یہ شعر سب سے پڑھوایا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں