بڑوں کی تمباکو نوشی دیکھنے والے بچوں کی نفسیات میں تبدیلی -
The news is by your side.

Advertisement

بڑوں کی تمباکو نوشی دیکھنے والے بچوں کی نفسیات میں تبدیلی

تمباکو نوشی صحت کے لیے نہایت مضر عادت ہے اور یہ نہ صرف پینے والے کے لیے نقصان دہ ہے بلکہ ان افراد کے لیے بھی اتنی ہی نقصان دہ ہے جو خود تو سگریٹ نہیں پیتے تاہم اپنے آس پاس کے افراد کی سگریٹ نوشی کی وجہ سے سگریٹ کے دھوئیں میں وقت گزارتے ہیں۔

حال ہی میں امریکا میں کی جانے والی ایک تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ ایسے افراد خصوصاً بچوں کی نفسیات میں بھی تبدیلی آجاتی ہے۔ وہ سگریٹ نوشی کو عادت بد سمجھنا چھوڑ دیتے ہیں اور اسے معمول کا عمل سمجھ کر قبول کرلیتے ہیں۔

مزید پڑھیں: سعودی عرب میں بچوں کو سگریٹ فروخت کرنے پر پابندی

مذکورہ تحقیقی سروے کے لیے ماہرین نے امریکی ریاست فلوریڈا کے مختلف اسکولوں میں 50 ہزار سے زائد بچوں سے سولات پوچھے۔

ماہرین نے دیکھا کہ وہ بچے جنہوں نے اپنے گھر کے افراد، بڑوں یا دوستوں کو سگریٹ نوشی کرتے دیکھا تھا، وہ بچے اسے ایک معمول کا عمل خیال کرتے تھے اور ان کی نظر میں سگریٹ نوشی کوئی ایسی عادت نہیں تھی جس سے چھٹکارہ پانا ضروری ہو۔

تحقیق میں شامل ایک ماہر طب کا کہنا ہے کہ نہ صرف سگریٹ نوش افراد کے ساتھ وقت گزارنا، بلکہ سگریٹ کے اشتہارات دیکھنا بھی اسے لوگوں کے لیے قابل قبول بنانے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔

مزید پڑھیں: مچھلی کے تیل کا استعمال سگریٹ نوشی ترک کرنے میں معاون

ماہرین کا کہنا ہے کہ جب بچے کسی عمل کو معمول کا حصہ سمجھنے لگتے ہیں تو ان میں اس عمل کو اپنانے کے امکانات بہت زیادہ ہوجاتے ہیں۔

تحقیق میں شامل طبی ماہرین نے والدین اور بڑوں کی سگریٹ نوشی کو، بچوں کو سگریٹ نوش بنانے کی بڑی وجہ قرار دیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں