The news is by your side.

Advertisement

قاتل بیوی کو پینشن دینی ہے یا نہیں؟ بھارتی عدالت کا دلچسپ اور انوکھا فیصلہ

چنڈی گڑھ : بھارتی عدالت نے اپنی نوعیت کا ایک انوکھا اور دلچسپ فیصلہ سنایا ہے، جس کے تحت اپنے شوہر کو قتل کرنے والی بیوی بھی پینشن حاصل کرنے کی حقدار کہلائے گی۔

ہریانہ، پنجاب ہائی کورٹ کے فیصلے کے مطابق قتل کرنے والی بیوی کو بھی پنشن سے محروم نہیں رکھا جاسکتا، جج نے ریمارکس دیئے کہ سنہری انڈا دینے والی مرغی کو کوئی ذبح نہیں کرتا۔

بھارتی نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ نے بلجیت کور بمقابلہ ریاست ہریانہ کیس میں25 جنوری کو فیصلہ سنایا۔جس میں کہا گیا کہ بیوی کو کسی بھی صورت میں خاندانی پنشن سے محروم نہیں کیا جاسکتا، اگربیوی نے شوہر کو قتل کیا ہو تب بھی ایسا نہیں کیا جاسکتا۔

عدالت کا کہنا ہے کہ خاندانیہ پینشن ایک ویلفیئر اسکیم ہے جو سرکاری ملازم کی موت کے بعد اس کے خاندان کو مالی امداد مہیا کرنے کیلئے دی جاتی ہے۔ بیوی اگر فوجداری مقدمہ میں قصور وار پائی جاتی ہے تو بھی وہ فیملی پنشن کی حقدار ہے۔

قبل ازیں انبالہ کی رہائشی خاتون بلجیت کور نے عدالت عالیہ کو بتایا کہ ہریانہ حکومت کے ملازم ترسیم سنگھ کی 2008میں موت واقع ہوئی تھی اور 2009 میں اس کا نام قتل کے کیس میں درج کرلیا گیا اور 2011 میں اسے مجرم قرار دیا گیا۔

بلجیت کور2011 تک پینشن حاصل کرتی رہی لیکن قتل کیس میں قصور وار ٹھہرائے جانے کے بعد حکومت ہریانہ نے شوہر کی پنشن جاری کرنے پر پابندی عائد کردی۔

پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ نے ہریانہ حکومت کے اس فیصلہ کو کالعدم قرار دیتے ہوئے متعلقہ محکمہ کو تمام بقایا جات کے ساتھ درخواست گزار کو دو مہینے کے اندر پنشن ادا کرنے کا حکم دیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں