The news is by your side.

Advertisement

ویراٹ کوہلی پر سابق وکٹ کیپر بیٹسمین کی شدید تنقید

نئی دہلی: بھارتی کرکٹ ٹیم کے سابق وکٹ کیپر بیٹسمین کرن مورے نے موجودہ کپتان ویراٹ کوہلی کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ دھونی کی عدم موجودگی سے اسپنرز بالخصوص رویندر جڈیجہ اور کلدیپ یادو کی کارکردگی متاثر ہوئی ہے۔

ایک انٹرویو میں بات کرتے ہوئے کرن مورے کا کہنا تھا کہ سابق کپتان مہندر سنگھ دھونی کے نہ ہونے سے جڈیجہ اور کلدیپ پہلے جیسے خطرناک نہیں رہے۔

مورے کا کہنا تھا کہ دھونی اپنے وقت میں بولرز کو مستقل مشورہ دیتے رہتے تھے، وہ وکٹ کے پیچھے سے بولرز کو زیادہ تر ہندی میں بتاتے رہے کہ گیند کس لائن پر ڈالنی ہے۔ یہ کام انہوں نے مسلسل 10 سے 12 سال تک کیا۔

انہوں نے کہا کہ دھونی کے وقت ویراٹ کوہلی ڈیپ مڈ وکٹ پر کھڑے ہوسکتے تھے لیکن اب انہیں گیند بازوں سے مشورہ کرنے کے لیے شارٹ ایکسٹرا کور یا مڈ آف پر کھڑا ہونا پڑتا ہے۔

بھارتی ٹیم کے سابق کپتان دھونی نے جس وقت اپنے کرکٹ کیریئر کا آغاز کیا تھا اس وقت کرن مورے بھارتی کرکٹ ٹیم کے چیف سلیکٹر تھے۔

مورے نے دھونی کی تعریفیں کرتے ہوئے کہا کہ دھونی کے بعد سے ہی دنیا کی باقی ٹیموں نے بھی ایک کپتان کی شکل میں وکٹ کیپر بلے باز کی تلاش شروع کردی لیکن اب دوسرا دھونی تلاش کرنا بہت مشکل ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر آپ پاکستان، انگلینڈ یا جنوبی افریقہ کی ٹیموں پر نگاہ ڈالیں تو وہاں وکٹ کیپر بلے باز کو کپتان بنانے کے قواعد چل رہے ہیں، ایسا اس لیے ہے کیونکہ ان ٹیموں نے اس کے فوائد دھونی کی شکل میں دیکھے ہیں۔

یاد رہے کہ آسٹریلیا کے دورے کے دوران ون ڈے اور ٹی 20 سیریز میں بھارتی اسپنرز کافی مشکل میں دکھائی دیے۔ کلدیپ یادو، رویندر جڈیجہ اور یزویندر چہل کی گیندوں پر آسٹریلوی کھلاڑیوں نے ون ڈے میچز میں بہت رنز بنائے۔

بھارت اور آسٹریلیا کے درمیان 3 ون ڈے میچز کی سیریز آسٹریلیا نے 1-2 سے جیت لی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں