The news is by your side.

کسان اتحاد کی 2گھنٹے میں مطالبات تسلیم نہ ہونے پر ملک جام کرنے کی دھمکی

اسلام آباد : چیئرمین کسان اتحاد نے دو گھنٹے میں مطالبات تسلیم نہ ہونے پر ملک جام کرنے کا اعلان کردیا

تفصیلات کے مطابق بجلی کی قیمتوں میں اضافہ، کھاد پر سبسڈی اور ڈیزل میں ریلیف نہ ملنے کے خلاف اسلام آباد بلیوایریامیں کسانوں کا احتجاج دوسرے روز میں داخل ہوگیا۔

کسان بلیو ایریا سے مین جناح ایونیو پر آگئے اور ہزاروں کسان ڈی چوک کی جانب بڑھنے لگے۔

چیئرمین کسان اتحاد نے کہا ہے کہ 2گھنٹے میں مذاکرات نہ کیےگئے توپورا پاکستان بلاک کرنےکی کال دیں گے۔

کسان اتحاد کے احتجاج کے باعث ایکسپریس روڈاور ملحقہ شاہراہوں پر ٹریفک جام اور گاڑیوں کی قطاریں لگ گئی ہیں۔

کسان اتحاد کا کہنا ہے کہ مطالبات کی منظوری تک دھرنا جاری رہےگا، طالبات تسلیم نہ کیےگئےتوڈی چوک پردھرنا دیں گے۔

مظاہرین نےپولیس کیجانب سے رکھی گئیں خاردارتاریں ہٹادیں ہیں اور پارلیمنٹ سے 2 کلومیٹر کے فاصلے پر ہیں۔

گذشتہ روز کسان اتحاد کی زیر قیادت کسانوں کی ریلی نے تمام تر کنٹینرز اور رکاوٹیں ہٹاتے ہوئی بلیو ایریا اسلام آباد پہنچ کر دھرنا دے دیا تھا۔

انتظامیہ نے مظاہرین کو ایف مائن پارک لیجانے کی کوشش مگر کسانوں نے بلیو ایریا میں ہی پڑاؤ ڈال لیا تھا۔

کسان اتحاد کے چیئرمین خالد حسین کا کہنا تھا کہ کسانوں کیلئے بجلی کے نرخ ون یونٹ ون ریٹ کیا جائے اور سیلاب میں پھنسے کسانوں کو کھاد اور بیج پر سبسڈی دی جائے۔

کسان مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ کسان کو اسکی فصل کا اچھا ریٹ دیا جائے اور کسان کیلئے ڈیزل کی قیمتوں میں بھی کمی کی جائے۔

مظاہرین کا کہنا تھا کہ جب تک مطالبات تسلیم نہیں کئے جاتے اور وفاقی حکومت مطالبات کی منظوری کا نوٹی فیکیشن جاری نہیں کرتی تب تک وہ اسلام آباد میں ہی پڑاؤ ڈالیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں