The news is by your side.

Advertisement

کے ایم سی افسران کا خاتون کو ہراساں کیے جانے کا انکشاف

کراچی میونسپل کارپوریشن کے افسران نے گجرنالہ کٹنگ پر بنے گھر کی مکین خاتون کو مبینہ طور پر ہراساں کرنا شروع کردیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میونسپل افسران فرعونیت پر اتر آئے، مسمار کیے جانے والے گھروں کی خواتین کو ہراساں کرنے لگے، ایسا ہی ایک واقعہ گجرنالہ کٹنگ پر واقع گھر کی مکین خاتون کے ساتھ پیش آیا ہے۔

متاثرہ خاتون نے فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) سائبر کرائم ونگ سندھ کو درخواست دے دی۔

خاتون کی جانب سے ایف آئی اے کو دی جانے والی درخواست میں کہا گیا ہے کہ ‘خودکشی کرلوں گی مگر عزت پر سودا نہیں کروں گی’۔

متاثرہ خاتون نے درخواست میں بتایا کہ گجرنالہ کٹنگ میں میرا گھر تھا جسے گرا دیا تھا، ہم نے گھر مسمار نہ کرنے کی درخواست کی تو مجھ سے مجھے کہا گیا کہ رشوت دو گھر نہین گرایا جائے گا۔

درخواست کے متن میں کہا گیا ہے کہ 25 ہزار ادھار لیکر کے ایم سی افسران کو رشوت دی جس کے بعد انہوں نے مزید رشوت کا تقاضا کیا اور رشوت نہ دینے پر ذاتی مراسم کا کہا گیا۔

خاتون نے درخواست کے متن میں مزید کہا کہ کے ایم سی افسران مجھے فون پر ملنے کےلیے پیغامات بھی دیتے رہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں