The news is by your side.

Advertisement

کوسووکی پارلیمنٹ میں شیلنگ‘اجلاس ملتوی

کوسوو:پارلیمنٹ میں اپوزیشن جماعت نے مونیٹینیگرو کے ساتھ ہونے والے سرحدی کے مخالفت میں ایوان کے اندر ہی آنسو گیس کے شیل فائر کردیئے۔

تفصیلات کے مطابق کوسوو کے پارلیمنٹ ہاوس بدھ کے روز اجلاس جاری تھا جس میں پڑوسی ملک مونیٹینیگرو کے ساتھ ہونے ہونے والے سرحدی معاہدے کو روکنے کے لیے منتخب رکن پارلیمان کی جانب سے آنسو گیس کے شیل فائر کیے گئے۔ جس کے باعث پارلیمنٹ ہاوس میں دھواں بھرجانے کی وجہ سے اسپیکر نے اجلاس ملتوی کردیا۔

کوسووہ کی پارلیمنٹ میں شیلنگ کے باعث دھواں بھرا ہوا ہے

کوسووکی اپوزیشن جماعت ویٹیوینڈوسجی کے ایم پیز کا دعویٰ ہے کہ سن2015 میں مونٹینیگرو کے ساتھ ہونے والے معاہدہ غلط تھا جس کے تحت کوسوو کا 8000 ایکٹرعلاقہ اپنے پڑوسی کے حوالے کردیا تھا۔

واضح رہے کہ مونٹینیگرو کے ساتھ ہونے والا یہ معاہدہ کوسووکی عوام کے لیے بہت اہمیت کا حامل تھا جس کے بعد وہ بغیر ویزے کے یورپ کا سفر کرسکتے تھے۔

خیال رہے کہ ماضی میں بھی کوسووکی اپوزیشن جماعت ویٹیوینڈوسجی نے معاہدے کو روکنے کے لیے ایوان میں احتجاج کیا تھا اور آنسو گیس کے شیل بھی فائر کیے تھے جس کے بعد مقامی پولیس سے اپوزیشن جماعت کی جھڑپیں بھی ہوئی تھی۔ کوسووہ پارلیمنٹ اسپیکر نے پارلیمنٹ میں گیس بھرجانے کے باعث اجلاس کو ملتوی کردیا تھا۔

کوسووکی عوام کے لیے بغیر ویزے کے یورپ جانے کے لیے مونیٹینیگرو کے ساتھ معاہدہ اہم شرط ہے۔ کوسووہ کے تمام پڑوسی ممالک 2010 کے شینجن معاہدے کے بعد سے سربیا، البانیا، مونیٹینیگرو اور بوسنیا کے شہری بغیر ویزے کے یورپ کا سفر

کرسکتے ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل

میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں