site
stats
خیبر پختونخواہ

خیبر پختونخوا اسمبلی: 600 ارب روپے سے زائد کا بجٹ پیش

 

پشاور : خیبر پختونخوا حکومت کا آئندہ مالی سال 2017-18کیلئے 600ارب سے زائد کا بجٹ پیش کردیا گیا۔ صوبائی وزیرخزانہ مظفر سید نے بجٹ پیش کیا۔ ان کی تقریر کے دوران اپوزیشن ارکان نے شور شرابہ کیا اور نعرے بازی کرتے ہوئے بجٹ کی کاپیاں پھاڑ کر پھینک دی گئیں۔

تفصیلات کے مطابق خیبر پختون خواہ حکومت نے آئندہ مالی سال کا بجٹ پیش کردیا۔ بجٹ میں تعلیم اور صحت پر خاص توجہ دی گئی ہے۔ سی پیک اور سرمایہ کاری کے فروغ کیلئے صوبے بھر میں سترہ اکنامک زون بھی قائم کئےجائیں گے۔

اسپیکر اسد قیصر کی زیرصدارت خیبرپختونخوا اسمبلی کا بجٹ اجلاس منعقد ہوا، اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر خزانہ مظفر سید نے بتایا کہ سالانہ ترقیاتی پروگرام کے لئے 208ارب روپے مختص کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔

ترقیاتی اورغیر ترقیاتی پروگراموں کیلئے رقم مختص

صوبے میں ترقیاتی پروگرام کیلئے126ارب روپے مختص کئے گئے ہیں اور غیرترقیاتی کاموں کیلئے385 ارب روپے رکھے گئے ہیں جبکہ نئے منصوبوں کیلئے19ارب روپے اورجاری منصوبوں کےلئے79ارب رکھنے کی تجویز دی گئی ہے.

اس کے علاوہ غیرملکی فنڈنگ سے ترقیاتی منصوبوں کے لئے 82ارب رکھنے کی تجویزدی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کےپی کے میں پرامن ماحول واپس لانا چیلنج تھا، صوبے امن کی صورتحال کے باعث سرمایہ کاری نہیں تھی، صوبے سے کرپشن اور بدعنوانی کا خاتمہ کیا، حکومت پہلےدن سےانسانی وسائل کی ترقی پرکام کررہی ہے۔

تنخواہ اور پینشن میں اضافہ

وزیرخزانہ مظفر سید کا کہنا تھا کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن میں 10 فیصد اضافے کا اعلان کیا گیا ہے، جکبہ ایڈ ہاک ریلیف 2010 کو تنخواہوں میں ضم کردیا گیا۔ایک سے16گریڈ تک کےملازمین کوترقی دی گئی، گریڈ ایک سے 16تک کے ملازمین کی اپ گریڈیشن کی گئی ہے۔

ہیلتھ کارڈ کیلئے پانچ ارب چالیس کروڑ روپے

بجٹ کی مزید تفصیلات بیان کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اسپتالوں کیلئے آلات کی خریداری کیلئے 12ارب روپے ہیلتھ انشورنس کیلئے5ارب 40 کروڑ روپے مختص کیے گئے ہیں، 69 فیصد عوام کو ہیلتھ انشورنس فراہم کی جائےگی۔

صحت کیلئے بڑی رقم مختص

 صحت کے شعبے کے لئے 25ارب سے زائد رقم مختص کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ بلین ٹری منصوبے کے تحت صوبے میں ایک  ارب درخت لگائے جائیں گے۔

وزیرخزانہ مظفر سید نے کہا کہ ہمیں تمام شعبے بد انتظامی کا شکار ملے ہیں، کے پی کے پولیس بغیر کسی دباؤ کے عوام کی خدمت کررہی ہے، خیبرپختونخوا سرمایہ کاروں کے لئے جنت کی طرح ہے۔

  حکومتی اداروں پرعوامی اعتماد بحال کرنامشکل کام تھا، سوات ایکسپریس وے کے لئے 30 ارب روپے مختص جبکہ انہوں نے بتایا کہ صوبے میں نئے کالجز کی تعمیر جاری ہے، اساتذہ کی تعداد 40ہزار تک پہنچ گئی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top