خیبرپختونخوا میں مرد آفیسرز کی خواتین اساتذہ کو کال کرنے پر پابندی
The news is by your side.

Advertisement

خیبرپختونخوا میں مرد آفیسرز کی خواتین اساتذہ کو کال کرنے پر پابندی

پشاور : محکمہ تعلیم خیبرپختونخوا نے مرد آفیسرز کی خواتین اساتذہ کو کال کرنے پر پابندی عائد کردی اور کہا جو مرد خلاف ورزی کرے گا اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ تعلیم خیبرپختونخوا نےمرد آفیسرزکی خواتین اساتذہ کو کال کرنے پر پابندی کا فیصلہ کرلیا اور باقاعدہ نوٹیفکشن جاری کردیا ہے۔

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ خواتین اساتذہ سےکسی بھی مرد کلرک، آفیسر، آفیشلز کی جانب سےرابطہ کرنے پرپابندی عائد کردی گئی ہے ، اب مرد آفیسرز خواتین کو کال نہیں کرسکتے ۔

نوٹیفیکشن کے مطابق محکمہ تعلیم کے کسی آفیسر کوخواتین اساتذہ سےرابطہ کرناہوتوخواتین آفیسرزکے ذریعے ہی رابطہ ہوگا، جو مرد خلاف ورزی کرے گا اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

مزید پڑھیں : خیبر پختونخواہ میں گرلزاسکولز کے پروگرامز میں مردوں کی شرکت پرپابندی

یاد رہے اکتوبر 2018 میں خیبر پختونخواہ میں لڑکیوں کے اسکولوں کی تقریبات میں مردحضرات کی شرکت اور تقریبات کی میڈیا کوریج پر بھی پابندی عائد کی گئی تھی۔

مشیر تعلیم ضیاء اللہ بنگش نے بتایا وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان کی ہدایت پر یہ پابندی لگائی ، اعلامیہ میں کہا گیا تھاکہ گرلزاسکولزکی تقریبات میں خواتین ہی مہمان خصوصی ہوں گی، تقریبات میں مرد حضرات کو بطور مہمان خصوصی نہ بلایاجائے۔

مشیر تعلیم کا کہنا تھا کہ پابندی کا فیصلہ والدین کی شکایات اور صوبے کی روایات کو مدنظر رکھتے ہوئے کیا گیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں