site
stats
پاکستان

چترال: بلند ترین پولو گراؤنڈ سی پیک منصوبے کا حصہ بن گیا

اسلام آباد : خیبر پختونخواہ حکومت اپنے صوبے سے گزرنے والی پاک چین اقتصادی راہداری کی مغربی گذرگاہ پر بھی مشرقی گذرگاہ جیسے منصوبے اور سہولیات حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئی، منصوبے کے تحت پاکستان کا بلند ترین پولو گراؤنڈ اور گرم چشمے پر جدید ہوٹل تعمیر کیے جائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کے تحت ہزارہ ڈویژن میں صنعتی ، تجا رتی، معا شی ور سیا حتی ترقی کے مواقع کا جائزہ لینے کے لئے ایبٹ آباد میں ڈپٹی کمشنر کپٹن ریٹائرڈ اورنگزیب حیدر کی زیر صدارت سی پیک کانفرنس منعقد ہوئی۔

کانفرنس میں شرکاء کو بتایا گیا کہ خیبر پختو نخوا حکو مت صو بے سے گزرنے والے سی پیک کے مغر بی رو ٹ پر بھی مشر قی رو ٹ کے مسا وی سہولیات و منصو بے حا صل کر نے اور گلگت سے چترا ل تک ایک نیا رو ڈ سی پیک میں شا مل کر وا نے میں کا میا ب ہو گئی۔

کانفرنس کے موقع پر ڈپٹی کمشنر نے ہزارہ میں پیدا ہو نے والے تر قی کے مواقع کا تفصیلی جا ئزہ لینے کے علا وہ ان مواقع سے فا ئدہ اٹھا نے کی را ہ میں حا ئل رکاوٹو ں کی نشا ندہی بھی کی اور سدباب کے لیے راست اقدام اٹھانے کی ضرورت پر ذور دیا گیا۔

اس منصوبے کے تحت بلند ترین مقام پر واقع پولو گراؤنڈ کو بھی سی پیک میں شامل کیا گیا ہے جبکہ گرم چشمہ کے مقام پر جدید سہولیات سے آراستہ بین الاقوامی طرز پر ہوٹل تعمیر کیا جائے گا۔

دونوں ممالک کے درمیان ہونے والے معاہدے کے تحت ایک پولو گراؤنڈ، ایڈوینچر کلب بھی تعمیر کیا جائے گا جس پر 1 کروڑ 20 ارب روپے کی لاگت آئی گی، ان منصوبوں کی تکمیل کے بعد حکومت کو سالانہ 38 کروڑ روپے کی آمدنی حاصل ہوگی۔

واضح رہے کہ کانفرنس میں ایشین ڈویلپمنٹ بینک، صوبائی حکومت کے نمائندگان، انڈسٹری ایسو سی ایشن ایبٹ آباد کے صدر حا جی محمد افتخار اور جنرل ریٹائرڈ ایاز رانا نے بھی شرکت کی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top