The news is by your side.

Advertisement

خیبرپختونخواہ اسمبلی، اپوزیشن اراکین کی قائمہ کمیٹیوں سے مستعفیٰ ہونے کی دھمکی

پشاور: خیبرپختونخواہ اسمبلی میں دورانِ اجلاس اپوزیشن اراکین نے بات نہ سننے پر قائمہ کمیٹیوں سے مستعفیٰ ہونے کی دھمکی دے دی۔

تفصیلات کے مطابق مشتاق غنی کی زیر صدارت خیبرپختونخواہ اسمبلی کا اجلاس ہوا، اپوزیشن اراکین نے اسپیکر اسمبلی سے الجھنے کی کوشش کی تو انہوں نے بیٹھنے کی تلقین کی۔

اپوزیشن اراکین نے اسپیکر کی ڈائس کا گھیراؤ بھی کیا اور اعلان کیا کہ اگر اُن کی بات نہیں سُنی جائے گی تو ارکان قائمہ کمیٹیوں سے مستعفیٰ ہوجائیں گے۔

دوسری جانب سینیٹ کے اجلاس میں بھی حکومتی اراکین اور اپوزیشن رکن کے درمیان تلخ کلامی ہوئی۔ پیپیلزپارٹی کی سینیٹر سسی پلیجو نے کراچی سے ٹھٹھہ کے لیے مانگے جانے والے ٹول ٹیکس کو غیرقانونی قرار دیتے ہوئے لوٹ کھسوٹ قرار دیا تو مراد سعید سے اُن کی تلخ کلامی ہوگئی۔

مزید پڑھیں: پنجاب اسمبلی میں شور شرابہ، تین مسلم لیگی ارکان کی رکنیت معطل

وفاقی وزیر برائے مواصلات نے جواب دیا کہ ’’لوٹ کھسوٹ جعلی اکاؤنٹس سے ہورہی ہے، میں نے اس معاملے کو اٹھایا تو پی پی کی رکن غصے میں آگئیں۔

قبل ازیں پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں اپوزیشن اراکین نے شور شرابہ کیا جس پر تین اراکین کی رکنیت معطل کردی گئی، ڈپٹی اسپیکر نے شور شرابے اور تلخ کلامی کے باعث اشرف رسول کے بعد عظمیٰ بخاری اور عبد الرؤف کی رکنیت بھی معطل کردی۔ اراکین کی رکنیت معطل کرنے کافیصلہ ڈپٹی اسپیکرکی زیرصدارت اجلاس میں کیاگیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں