site
stats
پاکستان

عالمی عدالت جیسے اداروں میں مسلمانوں کو انصاف نہیں ملتا، بیرسٹرفروغ نسیم

اسلام آباد : بیرسٹرفروغ نسیم نے کہا ہے کہ یہ بات ثابت ہوچکی ہے کہ عالمی عدالت انصاف جیسےفورمز میں مسلمانوں کو انصاف نہیں ملتا تاہم یہ فائدہ ضرور ہوا کہ دہشت گرد کلبھوشن ایک اسٹیٹ ایکٹر ثابت ہوگیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام پاور پلے میں میزبان ارشد شریف سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان کو آئی سی جےمیں جانا ہی نہیں چاہیے تھا اب اگر آئی سی جےکافیصلہ نہ مانا توسلامتی کونسل میں پاکستان مخالف قرارداد آئے گی اس لیے آئی سی جےمیں کیس نہ لڑنا ہی عقل مندی ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں بھارت نے بھی عالمی عدالت انصاف کے اختیار کو چیلنج کیا تھا اور کئی معاملات میں بھارت بھی آئی سی جے میں نہیں گیاتھا تاہم اب پاکستان کو آئی سی جےسے نکلنے کیلئے وسیع لابنگ کرنا ہوگی۔

بیرسٹرفروغ نسیم نے کہا کہ آئی سی جے میں بھارت کے خلاف مضبوط کیس پیش کرسکتے تھے لیکن ایسا نہ ہوسکا اگر کلاز آئی کا استعمال کیا جاتا تو یہ دن نہ دیکھنا پڑتا اور بھارتی دہشت گرد کلبھوشن کومثال کے طور پر پیش کرناچاہیے تھا اور اگر کلبھوشن کیس ہو سکتا ہے تو شکیل آفریدی کو بھی رہائی مل سکتی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top