The news is by your side.

Advertisement

کویت : تارکین وطن کیلئے امید کی کرن

کویت سٹی : مملکت میں روزگار کیلئے آئے ہوئے وہ تارکین وطن جن کی عمر مقررہ حد سے زائد ہوگئی تھی ان سے مزید کام نہ لینے کا فیصلہ کویت کیلیے نقصان کا باعث بن رہا ہے۔

اس حوالے سے چیرمین کویت چیمبر آف کامرس نے کہا ہے کہ 60 سالہ افراد کے لئے وہی فیصلہ لیا جائے گا، جو ریاست کے اقتصادی و سماجی مفاد میں ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق کویت چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے چیئرمین محمد جاسم الصقر نے حال ہی میں کویت کے ولی عہد شہزادہ شیخ مشعل الاحمد الجابر الصباح سے ملاقات کی۔

اس موقع پر ان تارکین وطن مزدوروں کے مسئلے پر تبادلہ خیال کیا گیا جو 60 سال اور اس سے زیادہ عمر کے ہیں اور جن کے پاس صرف ہائی ا سکول سرٹیفکیٹ، ڈپلومہ یا اس سے کم تعلیمی قابلیت ہے۔

الصقر نے میڈیا کو بتایا کہ انہوں نے محسوس کیا ہے کہ ولی عہد شہزادہ اس مسئلے کی تمام جہتوں پر گہری تفہیم رکھتے ہیں۔

محمد جاسم الصقر نے مزید کہا کہ وہ اس بات پر پوری طرح یقین رکھتے ہیں کہ یہ معاملہ کویت کے اقتصادی اور سماجی فیصلے کے مطابق حل کی راہ پر گامزن ہے۔

کے سی سی آئی کے چیئرمین نے میڈیا کو بتایا کہ ولی عہد کے ساتھ ملاقات بہت تعمیری تھی اور مجھے مکمل یقین ہے کہ یہ معاملہ کویت کے معاشی اور سماجی مفاد کے ساتھ ساتھ انسانیت کے طرز عمل کے مطابق حل کیا جائے گا۔

یاد رہے کہ60 سال سے زائد عمر رسیدہ تارکین وطن کے ورک پرمٹ کی تجدید نہ کرنے کے فیصلے سے کویت کے ہنر مند کارکنوں کو نقصان پہنچ رہا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں