The news is by your side.

Advertisement

کویت: تارکین وطن کے رہائشی اقاموں کے سلسلے میں اہم خبر

کویت سٹی: پارلیمانی وزرا نے 60 سال سے زائد عمر کے تارکینِ وطن کے رہائشی اقاموں کی تجدید کے فیصلے پر نظر ثانی کی تجویز پیش کر دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق کویت میں پبلک اتھارٹی برائے افرادی قوت نے فیصلہ کیا تھا کہ معمر تارکین وطن کے رہائشی اجازت ناموں کی مزید تجدید نہیں کی جائے گی، تاہم رکن پارلیمنٹ عبداللہ التوراجی نے اس فیصلے پر نظرثانی کی تجویز پیش کی ہے۔

پارلیمنٹ کے رکن نے کہا کہ کویت میں پیدا ہونے والے افراد، اور کویتی خواتین سے شادی کرنے والوں کو نئے ضوابط سے مستثنیٰ قرار دینے کے لیے، ان تارکین وطن کی درجہ بندی کی جائے۔

التوراجی نے کہا کہ ساٹھ سال سے زیادہ عمر کے تارکین وطن کو بھی پابند کیا جائے، کہ وہ سرکاری اسپتالوں میں میڈیکل کیئر نہ لیں، یا وزٹ ویزا رکھنے والےاور انشورنس بیمہ نہ ہونے پر عائد فیس کی ادائیگی لازمی کریں۔

انھوں نے سفارش کی کہ رہائشی اجازت ناموں کی تجدید نہ کرنے کے فیصلے سے لیبر مارکیٹ اور بعض تکنیکی خدمات کی فیسوں پر اثرات مرتب ہو سکتے ہیں، اس لیے اس کے نفاذ کے پہلے 6 ماہ کے دوران مطالعہ کیا جائے کہ کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں۔

اجلاس میں قانون سازوں کی جانب سے یہ استفسار بھی کیا گیا کہ وہ تارکین وطن کی تعداد جاننا چاہتے ہیں، جو کویت میں پیدا ہوئے اور کویتی خواتین سے شادی کی، اور وہ تارکین وطن جو مختلف نوعیت کے جرائم میں ملوث تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں