The news is by your side.

Advertisement

کویت: غیر ملکیوں کے ورک پرمٹ سے متعلق اہم خبر

کویت: ساٹھ سالہ متعدد غیر ملکیوں کے ورک پرمٹ کی تجدید نہ ہو سکی۔

تفصیلات کے مطابق پبلک اتھارٹی برائے افرادی قوت نے کویت میں مقیم متعدد 60 سالہ غیر ملکی غیر گریجویٹ تارکین وطن کے ورک پرمٹ (اقامہ) کی تجدید کرنے سے انکار کر دیا۔

پبلک اتھارٹی نے واضح کیا کہ ان افراد کی ہیلتھ انشورنس پالیسیاں ان کمپنیوں کے ذریعے جاری کی گئی ہیں جو کویت اسٹاک ایکسچینج میں درج نہیں ہیں، اور جو انشورنس ریگولیٹری یونٹ (IRU) سے منظور شدہ نہیں۔

مذکورہ زمرے کے تارکین وطن کے لیے ورک پرمٹ کی تجدید کے لیے انشورنس پالیسی کا مسئلہ حال ہی میں حل کیا گیا ہے، اب پبلک اتھارٹی نے نان لِسٹڈ انشورنس کمپنیوں کی طرف سے جاری کردہ دستاویزات کو قبول کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

اتھارٹی نے واضح کیا کہ انشورنس ریگولیٹری یونٹ سے منظور شدہ 11 انشورنس کمپنیوں کی دستاویزات کو قبول کیا جائے گا۔

پی اے ایم نے کہا کہ جب تک نان لِسٹڈ کمپنیوں کی جانب سے جاری کردہ انشورنس دستاویزات کو قبول نہ کرنے کی شرط میں ترمیم اور منسوخی کا فیصلہ جاری نہیں کیا جاتا، تب تک وہ اپنے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے فیصلے پر عمل درآمد کے لیے پرعزم ہے۔

توقع کی جا رہی ہے کہ اس ہفتے لیبر انتظامیہ کو ایک اور سرکلر جاری کیا جائے گا جس میں ساٹھ کی دہائی کے غیر گریجویٹس کو نجی شعبے میں منتقل کرنے کی اجازت دی جائے گی جیسا کہ ماضی میں ہوا تھا۔

کویت اسٹاک ایکسچینج میں درج انشورنس کمپنیوں نے 60 سال یا اس سے زیادہ عمر کے غیر گریجویٹ تارکین وطن کے لیے انشورنس پالیسی کے دستاویزات جاری کرنا شروع کر دیے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں