The news is by your side.

Advertisement

کویتی حکومت تحریک عدم اعتماد سے قبل مستعفی

کویت: کویتی حکومت تحریک عدم اعتماد سے قبل مستعفی ہو گئی۔

تفصیلات کے مطابق کویت کی حکومت نے منگل کو وزیر اعظم کے خلاف عدم اعتماد کے ووٹ سے قبل استعفیٰ دے دیا۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی کونا نے رپورٹ کیا کہ پارلیمنٹ میں وزیر اعظم کے خلاف عدم اعتماد کے ووٹ سے پہلے، حکومت نے ایک ایسے وقت میں استعفیٰ پیش کیا ہے جب ایک طویل سیاسی تنازع نے خلیجی تیل پیدا کرنے والے ممالک میں مالیاتی اصلاحات کی راہ میں رکاوٹ ڈالی ہوئی ہے۔

وزیر اعظم شیخ صباح الخالد کی جانب سے حکومت کا استعفے کا خط ولئ عہد الشيخ مشعل الأحمد الجابر الصباح کو موصول ہو گیا ہے، جنھوں نے گزشتہ سال کے اواخر میں حکمران امیر کے فرائض سنبھالے تھے۔

کویت کے نئے وزیراعظم کی تقرری

شیخ صباح، حکمران الصباح خاندان کے رکن اور 2019 کے اواخر سے وزیر اعظم ہیں، ان کو کابینہ کے سربراہ کے طور پر مسلسل ایک متحارب مقننہ کا سامنا کرنا پڑا ہے، انھیں حزب اختلاف کے اراکین پارلیمنٹ کی جانب سے مبینہ بدعنوانی سمیت دیگر مسائل پر تابڑ توڑ سوالات کا سامنا ہے۔

عدم اعتماد کا ووٹ بدھ کو ہونا تھا۔ موجودہ حکومت کی تقرری دسمبر میں عمل میں آئی تھی، یہ منتخب پارلیمنٹ کے ساتھ جاری تعطل کے درمیان 2021 میں تیسری حکومت تھی۔

امیر کویت نے وزیراعظم اور کابینہ کے استعفے منظور کر لیے

واضح رہے کہ کویت نے اپنی اسمبلی کو دیگر خلیجی ریاستوں کے مقابلے میں زیادہ اثر و رسوخ دیا ہے، جس میں قانون پاس کرنے اور روکنے، وزرا سے سوال کرنے اور اعلیٰ سرکاری اہل کاروں کے خلاف تحریک عدم اعتماد پیش کرنے کا اختیار شامل ہے۔

کویت میں مستقل سیاسی تنازعات کی وجہ سے اکثر کابینہ میں رد و بدل یا پارلیمنٹ کی تحلیل، ملک میں سرمایہ کاری اور مالیاتی و اقتصادی اصلاحات کو روکتی رہی ہے۔ فروری میں دفاع اور داخلہ کے وزرا، جو کہ حکمران خاندان کے افراد بھی تھے، نے اس بات پر استعفیٰ دے دیا تھا کہ بقول ان کے وزرا سے ‘ظالمانہ’ پوچھ گچھ کی جاتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں