لاہور: نو سالہ بچی زیادتی کے بعد قتل، تحقیقات میں‌ پیش رفت کا دعویٰ
The news is by your side.

Advertisement

لاہور: نو سالہ بچی زیادتی کے بعد قتل، تحقیقات میں‌ پیش رفت کا دعویٰ

لاہور: نو  سالہ بچی عائشہ  کے زیادتی اور قتل کیس کی تحقیقات میں اہم پیش رفت ہوئی ہے.

تفصیلات کے لاہور میں نو سالہ بچی کے قتل کیس میں‌ پولیس نے بچی کے ماموں تمجید کا پولی گرافی ٹیسٹ کیا.

پولیس کے مطابق تمجید کے پولی گرافی ٹیسٹ کی رپورٹ نیگٹیو آئی ہے، تمجید نے ٹیسٹ میں سوالات کے جواب میں غلط بیانی کی.

تفتیشی ٹیم نے تمجید سمیت چار  افراد کے ڈی این اے کرائے، امید ظاہر کی جارہی ہے کہ ڈی این اے رپورٹ کے بعد حقائق واضح ہوں گے.

یاد رہے کہ عائشہ کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں زیادتی کے بعد قتل ثابت ہوا تھا، 9 سال کی عائشہ کو 18 دسمبر 2018 کو قتل کیا گیا تھا.

خیال رہے کہ قصور کی ننھی زینب کا کیس بھی گذشتہ برس جنوری میں سامنے آیا تھا۔ زینب کو 4 جنوری 2018 کو زیادتی کے بعد قتل کیا گیا تھا۔

اس ہول ناک واقعے پر عوام کی جانب سے شدید ردعمل آیا اور حکومت پر کڑی تنقید کی گئی.


مزید پڑھیں: صرف قصور میں 10 برس میں 272 بچوں سے زیادتی کے کیسز ہوئے، رپورٹ میں تہلکہ خیز انکشاف


یاد رہے کہ گذشتہ روز وفاقی محتسب نے اپنی تہلکہ خیز رپورٹ میں انکشاف کیا تھا کہ سال 2017 میں زیادتی کے 4 ہزار 139 واقعات رپورٹ ہوئے، سب سے زیادہ پنجاب میں 1 ہزار 89کیس رپورٹ ہوئے.

صرف قصور میں دس برس میں 272 کیسز ہوئے، لیکن چند ملزمان کو سزا ہوئی، زیادتی کرنے والوں میں بااثر سیاست دان، دولت مند اورپڑھے لکھے افراد شامل ہیں.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں