site
stats
پاکستان

لاہورہائیکورٹ نے پاکستان عوامی تحریک کو مال روڈ پر دھرنے کی اجازت دے دی

Tahir

لاہور : لاہورہائیکورٹ نے پاکستان عوامی تحریک کی جانب سے رات 10 بجے دھرنا ختم کرنے کی یقین دہانی کے بعد اجازت دے دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ نے پاکستان عوامی تحریک کو مال ر وڈ پر دھرنے کی اجازت دے دی، عدالت نے سی سی پی او لاہور کو ہدایت کی ہے کہ دھرنے کے شرکا کی سیکیورٹی یقینی بنائی جائے۔

عوامی تحریک نےعدالت میں آج رات 10بجے دھرنا مکمل کرنےکی یقین دہانی کرائی ہے، جس کے بعد ،تاجروں اور حکومت کے درمیان معاہدہ طے پا گیا۔

اس سے قبل لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس مامون رشید نے انجمن تاجران کے رہنما نعیم میر کی جانب سے پاکستان عوامی تحریک کا دھرنا روکنے کی درخواست پر مختصر سماعت کے بعد  پی اے ٹی، ایڈووکیٹ جنرل اور درخواست گزار کو باہمی مشاورت کی ہدایت دی ۔

عدالت نے ہدایت کی کہ تینوں فریقین مل کر دھرنے کے لیے قابل قبول حل نکالیں، عوام کی سیکورٹی کو مدنظر رکھتے ہوئے حل نکالا جائے۔


مزید پڑھیں : سانحہ ماڈل ٹاؤن، پاکستان عوامی تحریک کا آج دھرنا


دوران سماعت عدالت نے استفسار کیا کہ بتایا جائے دھرنے کی مدت کتنی ہو گی ، عدالت نے ریمارکس میں کہا کہ ماڈل ٹاؤن رپورٹ کا معاملہ ہائی کورٹ میں زیرالتوا ہے ، پھرپی اے ٹی کو دھرنا دینے کی کیا ضرورت ہے، اگر کوئی دہشت گردی کا واقعہ ہوا تو ذمہ داری کس پرعائد ہوگی۔

پی اے ٹی کے وکیل نے دلائل میں کہا کہ حکومت عدالتی حکم کی آڑ میں مظاہرین پر تشدد بھی کرسکتی ہے، پرامن احتجاج ہر شہری کا بنیادی حق ہے۔

سی سی پی اولاہور نے بیان میں کہا کہ دھرنا سڑک پر دیا گیا تو مجبوراً سڑک بند کرنا پڑتی ہے، سڑک کو بند نہ کیا جائے تو کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش آ سکتا ہے، ناصر باغ میں دھرنا دیا جائے تو پوری سیکیورٹی دی جا سکتی ہے۔

عدالت نے فریقین کے درمیان معاملات طے پانے کے بعد درخواست نمٹا دی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top