The news is by your side.

Advertisement

بلڈنگز بنانے کے لیے درخت نہیں کاٹے جائیں گے: عدالت کا حکم

لاہور: صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور کی ہائیکورٹ نے تعمیرات کے لیے درخت کاٹنے سے روک دیا، عدالت نے حکم دیا کہ درخت کاٹنے کے بجائے دوسری جگہ منتقل کیے جائیں۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ میں ماحولیاتی آلودگی کے خلاف کیس کی سماعت ہوئی، ماحولیاتی کمیشن کی جانب سے رپورٹ عدالت میں جمع کروا دی گئی۔

رپورٹ میں کمیشن نے شیخو پورہ میں 11 بھٹوں کی نشاندہی کی جو پرانی ٹیکنالوجی پر تھے، کمیشن نے 9 بھٹوں کو سیل کیا جبکہ مزید کارروائیاں جاری ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ ایل ڈی اے کی 122 میں سے 73 اسکیموں نے سیوریج چارجز ادا نہیں کیے، جوڈیشل کمیشن کی ہدایات پر 5 صنعتی یونٹس کے نمونے لیے گئے۔

لاہور ہائیکورٹ نے جی پی او کے سامنے سڑک کی ٹوٹ پھوٹ پر جواب طلب کرلیا، ہائیکورٹ نے سڑک تعمیر کرنے اور پودے لگانے کا حکم بھی دے دیا اور کہا کہ سڑک پر سے کوڑا کرکٹ صاف کر کے رپورٹ پیش کی جائے۔

عدالت نے تعمیراتی منصوبوں کے دوران درخت کاٹنے سے بھی روک دیا، عدالت نے حکم دیا کہ درخت کاٹنے کے بجائے دوسری جگہ منتقل کیے جائیں۔

موٹر وے پر دھوئیں کی وجہ سے گاڑیاں ٹکرانے کے واقعے پر ڈپٹی کمشنر شیخوپورہ سے رپورٹ طلب کرلی گئی جبکہ بجلی سے چلنے والی گاڑیوں کی پالیسی کے حوالے سے رپورٹ طلب کی گئی ہے۔

عدالت کا کہنا تھا کہ بتایا جائے پالیسی پر عمل درآمد کس حد تک ہوا، کیس کی مزید سماعت 3 جون تک ملتوی کردی گئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں