لاہور ہائیکورٹ نے اسموگ کمیشن کو ماحولیاتی آلودگی پر رپورٹ جمع کرانے کا حکم دے دیا -
The news is by your side.

Advertisement

لاہور ہائیکورٹ نے اسموگ کمیشن کو ماحولیاتی آلودگی پر رپورٹ جمع کرانے کا حکم دے دیا

لاہور: ہائیکورٹ میں ماحولیاتی آلودگی کے خلاف درخواست پرسماعت کے دوران جج نے اسموگ کمیشن کو ماحولیاتی آلودگی پر رپورٹ آئندہ سماعت میں جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور کے ایک شہری نے عدالت میں درخواست دے کر کہا ہے کہ ماحولیاتی آلودگی کے باعث شہر میں بیماریاں پھیل رہی ہیں۔

درخواست گزار نے کہا کہ لاہور دنیا کے آلودہ ترین شہروں میں شامل ہوچکا ہے، سابق چیف جسٹس نے حکومت کوآلودگی کا ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے نومبر2017 میں ماحولیاتی کمیشن بنانے کا حکم دیا تھا لیکن ماحولیاتی کمیشن نے کسی قسم کےانتطامات نہیں کیے۔

دریں اثنا ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے عدالت کو بتایا کہ سابق چیف جسٹس کے حکم پر مانیٹرنگ اسٹیشن بنا دیا گیا ہے اور آلودگی سے متعلق سینٹرل لیبارٹری کو بھی فعال کردیا گیا ہے۔ عدالت نے درخواست پرمزید کارروائی 9 جون تک ملتوی کردی۔

دنیا کے اسموگ سے متاثرہ 10 شہر


واضح رہے کہ باغوں کے شہر لاہور میں ماحولیاتی آلودگی میں دن بدن اضافہ ہورہا ہے جس کی وجہ سے بچے اور بڑے مختلف بیماریوں کا شکار ہو رہے ہیں، انسانوں کا سانس لینا بھی محال ہوگیا، جب کہ محکمہ تحفظ ماحولیات آلودگی ختم کرنے کے لیے اقدامات کرنے میں ناکام ہوگیا ہے۔

آلودگی دنیا بھر کا مسئلہ ہے، وہ چاہے فضائی ہو، آبی ہو، موسمیاتی ہو یا پھر زمینی لیکن شہر لاہور میں دیگر آلودگیوں کے ساتھ ساتھ ماحولیاتی آلودگی خطرناک حد تک بڑھ رہی ہے، انسانی سرگرمیوں کو اس آلودگی کی بڑی وجہ کہا جاسکتا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں