site
stats
پاکستان

لاہور ہائیکورٹ نے جادو ٹونے کے اشتہارات پر پابندی عائد کردی

لاہور: ہائی کورٹ نے جادو ٹونے کے اشتہارات پر پابندی عائد کرتے ہوئے پیمرا اور وفاقی حکومت سے کہا ہے کہ حکم پر فوری طور پر عمل درآمد کیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس منصور علی شاہ نے کیس کی سماعت شروع کی تو درخواست گزار اپوزیشن لیڈرپنجاب اسمبلی میاں محمود الرشید کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا کہ مختلف ٹی وی چینلز پر جادو ٹونے کے اشتہارات چلائے جارہے اور اس سے عوا م کو گمراہ کیاجارہا ہے ان اشتہارات سے معاشرتی اور اخلاقی برائیاں پیدا ہو رہی ہیں۔

درخواست میں کہا گیا کہ ایسے اشتہارات مذہبی تعلیمات کے خلاف ہیں جن کی وجہ سے گھریلو لڑائی جھگڑوں اور قتل کے واقعات میں بھی اضافہ ہوا ہے۔

میاں محمودالرشید کے مطابق پیمرا قوانین ایسے اشتہارات کی اجازت نہیں دیتا مگر اس کے باوجود ایسے اشتہارات کھلے عام چلائے جا رہے ہیں اس حوالے سے پیمرا کو متعدد درخواستیں دے چکے ہیں لیکن کوئی کارروائی نہیں ہوئی لہذا ایسے اشتہارات پر پابندی عائد کی جائے۔

سرکاری وکیل نے دلائل دیے کہ جادو ٹونے کے اشتہارات چلانے والے چینلز اور کیبل آپریٹر کے خلاف کارروائی کی جا رہی ہے۔ عدالت نے وکلا کے دلائل مکمل ہونے کے بعد جادوٹونے کے اشتہارات پرپابندی لگاتے ہوئے پیمرا اور وفاقی حکومت کو فوری عمل درآمد کرنے کاحکم دے دیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top