The news is by your side.

Advertisement

قیام پاکستان کے وقت کے زمینی تنازع کا فیصلہ سنا دیا گیا

لاہور: لاہور ہائیکورٹ نے قیام پاکستان کے وقت1947 کے زمینی تنازع کا فیصلہ سنا دیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہورہائیکورٹ نے قیام پاکستان کے وقت کی زمین کے تنازع کا فیصلہ سنا تے ہوئےدرخواست گزار پر دس لاکھ روپے جرمانہ کردیا ہے، جسٹس چوہدری محمد اقبال نے آغا مزمل کی درخواست پر تحریری فیصلہ جاری کیا ۔

تحریری فیصلے میں عدالت نےکہا کہ درخواست گزاراپنا مؤقف ثابت کرنے میں ناکام رہا، درخواست گزار کے مطابق سات جولائی انیس سو سینتالیس کو انیر سنگھ سے زمین خریدی گئی، قیام پاکستان کے بعد انیرسنگھ بھارت منتقل ہوگیا۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیا کہ انیس سو باون میں ڈپٹی کمشنر نے زمین کا نوٹیفکیشن جاری کیا درخواست گزار کےمطابق انہوں نے تین سو باسٹھ کنال اراضی کےانتقال کو چیلنج کیا جبکہ ریونیوریکارڈ میں درخواست گزار کےبڑوں یاز مین خریدنےکا ذکر نہیں پایا گیا۔

لاہور ہائی کورٹ میں دو ماہ کے دوران اس طرح کا دوسرا فیصلہ سنایا ہے، اس سے قبل دو جنوری کو بھی لاہور ہائیکورٹ نے 6 دہائیوں سے جاری زمین کے تنازع کا فیصلہ سناتے ہوئے 120 کنال اراضی 1962 کے نرخ پر خریدنے کی درخواست خارج کردی تھی۔

درخواست گزار خدا بخش نے 1947کے بعد چھوٹو ولد رتو کی الاٹی 120 کنال زمین 1961 میں خریدنے کا دعویٰ کیا تھا، عدالت نے چھوٹو ولد رتو کا دعویٰ جعلی ثابت ہونے پر الاٹمنٹ منسوخ کر دی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں