The news is by your side.

Advertisement

سلطان چغتائی جنھیں ریلوے اسٹیشن کی عمارت اپنی جیب سے تعمیر کروانا پڑی

پاکستان کے صوبہ پنجاب کا لاہور جنکشن، ریلوے اسٹیشن برطانوی دور میں تعمیر کردہ وہ یادگار ہے جسے جنوبی ایشیا میں برطانوی طرزِ تعمیر اور انجیئنرنگ کی ایک مثال بھی کہا جاتا ہے۔

اس ریلوے اسٹیشن نے جہاں معاشی نظام پر مثبت اثرات مرتب کیے، وہیں مقامی ثقافت کو بھی اس کے وسیع نیٹ ورک کی بدولت پھلنے پھولنے کا موقع ملا۔

ریلوے کے اس نظام سے متعلق ایک اہم اور دل چسپ بات یہ ہے کہ اس کی تعمیر کا ٹھیکا اس زمانے میں ایک سابق مغل عملدار میاں محمد سلطان چغتائی کو دیا کیا گیا، جنھیں‌ اس وقت سخت مشکل اور مالی نقصان اٹھانا پڑا جب اس ریلوے اسٹیشن کی مرکزی عمارت کے سامنے والا حصہ اس وقت کی سرکار نے مسترد کردیا۔

حکومت کی جانب سے اس حصّے کی تعمیر کو رد کرتے ہوئے ٹھوس جواز اور وجوہ بتائی تھیں جس پر ٹھیکے دار میاں‌ محمد سلطان چغتائی کو اپنی جیب سے عمارت کے اس حصّے کو دوبارہ تعمیر کروانا پڑا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں