site
stats
پاکستان

دہشتگردی کے خاتمے کیلئے اجتماعی کوششیں کرنا ہونگی،  جسٹس اعجاز الحسن

لاہور : چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس اعجازالحسن نے کہا ہے کہ دہشت گردی عالمی مسئلہ بن چکا ہے،اس سے نمٹنا تمام اقوام کی اجتماعی ذمہ داری ہے۔ چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ انسداد دہشت گردی عدالتوں کے ججز کی تربیتی ورکشاپ سے خطاب کر رہے تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑنے کےلیے پوری دنیا سر جوڑ کر بیٹھی ہے ۔ پاکستان میں بھی اس حوالے سے مؤثر قانون سازی اور انسداد دہشت گردی قوانین کو جدید تقاضوں کے مطابق ڈھالنا ہوگا تاکہ معاشرے سے اس ناسور کو ختم کیا جا سکے۔

دہشت گردی پاکستان سمیت بہت سی اقوام کی خود مختاری اورسالمیت کےلیے خطرہ بن چکی ہے، دہشت گرد معصوم لوگوں کی جانوں سے کھیلتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں کو کیفر کردار تک پہنچائے بغیر اقوام عالم میں امن ممکن نہیں، پاکستانی عوام کی جان و مال کی حفاظت کی ذمہ داری پاکستان کے قانون نافذ کرنے والے اداروں سمیت عدالتوں پر بھی عائد ہوتی ہے۔

قانون کے نفاذ کو یقینی بنانا پولیس اور متعلقہ محکموں جبکہ مجرموں کو قرار واقعی سزائیں دینا عدلیہ کی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑنے کے لیے اپنے تفتیشی نظام اور پراسیکیوشن سسٹم کو جدید خطوط پر استوار کرنا ہوگا۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top