The news is by your side.

Advertisement

لاہور میں پولیس پر دو خواتین کو مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنانے کا الزام

لاہور: دوخواتین کو لاک اپ میں ذیادتی کا نشانہ بنایا گیا، دونوں خواتین کو چنیوٹ صدر پولیس اسٹیشن سے برآمد کر کے پیر کے دن لاہور ہائی کورٹ میں پیش کیاگیا۔

تفصیلات کے مطابق کوثر بی بی اور منظور نے بتایا کہ ایس ایچ او دونوں کو مختلف لوگوں کے خلاف مقدمات میں مدعی بنانا چاہتا تھا، جب اُن کی جانب سے انکار کیا گیا تو ان کو 26 اپریل کو اُن کے گھر سے گرفتار کر لیا گیا۔

انہوں نے پولیس پر الزام عائد کیا کہ ان کو دوران ٖحراست تشدد کا نشانہ بنایا گیا، اور ان کے ساتھ ذیاتی کی گئی، جس پر عدالت نے حکم دیا کہ دونوں خواتین کا میڈیکل ٹیسٹ کروا کر رپورٹ عدالت میں جمع کرائی جائے۔

اگر واقعہ صحیح ہوا تو یہ پاکستانیوں کے لئے انتاہی شرمندگی کی بات ہوگی، کہ پولیس جس کا کام شہریوں کی جان ومال کو یقینی بنانا ہے، اگر ایسے سنگین جرم کا ارتکاب کرتی ہے تو معاشرہ میں بگاڑ پیدا ہوگا۔

بدقسمتی سے، پولیس کرپشن اور دیگر جرائم میں ملوث ہونے کی وجہ سے ہمارے ملک میں وسیع پیمانے پر بدنام ہے.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں