لاہور: جناح اسپتال میں زہرہ بی بی کی موت ، حکومت نے غلطی تسلیم کرلی -
The news is by your side.

Advertisement

لاہور: جناح اسپتال میں زہرہ بی بی کی موت ، حکومت نے غلطی تسلیم کرلی

لاہور : پنجاب حکومت نے جناح اسپتال لاہور میں زہرہ بی بی کی ہلاکت کے حوالے سے اپنی غلطی کا اعتراف کر لیا ہے، وزیر صحت خواجہ عمران نذیر کا کہنا ہے کہ ہسپتال میں بستر فراہم کرنا حکومت کی ہی ذمہ داری ہے لیکن ڈاکٹرز کو بھی اپنے رویئے تبدیل کرنا ہونگے۔

تفصیلات کے مطابق جناح اسپتال میں زہرہ بی بی کی موت پر حکومت نے غلطی تسلیم کرلی ہے، وزیر صحت پنجاب خواجہ عمران نذیر نے کہا ہے کہ ہسپتالوں میں بستر فراہم کرنا حکومت کی ہی ذمہ داری ہے، زہرہ بی بی کو مختلف اسپتالوں میں منتقل کیا گیا لیکن کسی نے پوچھا تک نہیں، ڈاکٹروں کو اپنے رویئے بھی تبدیل کرنا ہونگے۔

ان کا کہنا تھا کہ زہرہ بی بی کو اسپتالوں میں ایمبولنس ہونے کے باوجود کسی نے لے جانا گوارہ نہ کیا، ڈاکٹروں کو اب ہڑتال اور دھرنا کلچر ختم کرنا ہو گا۔

خواجہ عمران نذیر نے کہا کہ ہیلتھ کونسل میں لاکھوں روپے کا بجٹ ہونے کے باوجود مریضوں کے لیے آپریشن کا سامان باہر سے منگوایا جاتا ہے۔


مزید پڑھیں : زہرہ بی بی کی موت کا ذمہ دار نجی اسپتال قرار، انکوائری کمیٹی تشکیل


اس سے قبل محکمہ صحت پنجاب نےغفلت کا قصوروار نجی اسپتال کو قرار دے دیا۔ مزید تحقیقات کے لئے انکوائری کمیٹی تشکیل دے دی گئی، محکمہ صحت پنجاب کادعویٰ ہے کہ زہرہ بی بی کی موت جناح اسپتال میں بستر نہ ملنے کی وجہ سے نہیں بلکہ نجی اسپتال کی جانب سے علاج میں غفلت برتنے سے ہوئی۔

واضح رہے کہ قصور کی رہائشی زہرہ بی بی کو دل میں تکلیف محسوس ہونے پر لاہور کے جناح اسپتال لایا گیا تھا، اسپتال کی انتظامیہ نے ایمرجنسی یا وارڈ میں مریضہ کو بستر نہ دیا اور خاتون کو راہداری کے فرش پر تڑپتا چھوڑ دیا جہاں وہ دم توڑ گئی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں