The news is by your side.

Advertisement

سندھ: عدالت نے محکمہ آبپاشی کی زمین سے قبضے ختم کرنے کا حکم دے دیا

کراچی: سندھ ہائی کورٹ نے حکم جاری کیا ہے کہ سندھ بھر میں محکمہ آب پاشی کی زمین سے قبضے ختم کرائے جائیں۔

تفصیلات کے مطابق دریائے سندھ کے نہری نظام کی زمینوں پر بڑے پیمانے پر قبضے کیے جا چکے ہیں، اس سلسلے میں سندھ ہائی کورٹ میں ایک کیس چل رہا ہے۔

آج اس کیس میں عدالت نے سندھ بھر میں محکمہ آب پاشی کی زمین سے قبضے ختم کرنے کا حکم دے دیا، کیس کی سماعت کے لیے ایک لاجر بینچ تشکیل دیا گیا تھا، جس نے تمام تجاوزات اور قبضے ختم کرنے کا حکم جاری کیا۔

عدالت نے انتظامیہ کو تجاوزات اور قبضے ختم کرنے کے لیے 30 جون تک مہلت دے دی ہے، اور تجاوزات 3 مرحلوں میں ختم کرنے کی حکومتی تجویز منظور کر لی، عدالت نے حکم دیا کہ تجاوزات بندوں سے کینالز سمیت ختم کیے جائیں اور مقرر مدت کے بعد کوئی مہلت نہیں ملے گی۔

عدالتی حکم میں کہا گیا ہے کہ پہلے مرحلے میں کینالز، مائینر شاخ اور بندوں سے 28 فروری تک تجاوزات ختم کیے جائیں، دوسرے مرحلے میں آب پاشی کی زمین پر قائم کمرشل مقاصد کے لیے تجاوزات کو 30 اپریل تک ختم کیا جائے، اور تیسرے مرحلے میں رہائشی مقاصد کے لیے بنائی گئی تعمیرات کو 30 جون تک ختم کیا جائے۔

دریں اثنا، عدالت نے تجاوزات کے خلاف دائر درخواستیں بھی خارج کر دیں، درخواستوں پر سماعت کرتے ہوئے عدالت نے کہا عدالت عظمیٰ تمام سرکاری زمینوں سے تجاوزات کے خاتمے کا حکم دے چکی ہے، تجاوزات خاتمے پر اعتراضات ہیں تو سپریم کورٹ سے رجوع کیا جائے۔

عدالت نے انسداد تجاوزات مہم سے متعلق آئندہ سماعت پر پیش رفت رپورٹ دینے کا حکم بھی جاری کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں