The news is by your side.

Advertisement

شاہ رخ جتوئی کو جیل میں سہولتوں کی فراہمی ،لانڈھی جیل سپرنٹنڈنٹ معطل

کراچی : سزائے موت پانے والے مجرم شاہ رخ جتوئی کو جیل میں سہولتیں فراہم کرنے پر چیف جسٹس کی ہدایت پرجیل سپرنٹنڈنٹ لانڈھی جیل کو معطل کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں شاہ رخ جتوئی کو جیل میں سہولتیں فراہم کرنے کے کیس میں چیف جسٹس ثاقب نثار کی ہدایت پرجیل سپرنٹنڈنٹ لانڈھی جیل کو معطل کردیا گیا۔

قائم مقام آئی جی جیل خانہ جات سپریم کورٹ میں پیش ہوئے۔ سپریم کورٹ کے حکم پر مجرم کو سینٹرل جیل کی کال کوٹھڑی میں دھکیل دیا گیا۔

چیف جسٹس ذمہ داران کے تعین کے لیے تحقیقات کا حکم دیتے ہوئے قائم مقام آئی جی جیل خانہ جات کو ہدایت کی جیل جائیں اورذمہ داران کےخلاف کارروائی کریں۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ بتایا جائے سزائےموت کے مجرم کواتنی کیسے دی گئیں۔

قائم مقام آئی جی جیل قاضی نذیر نے کہا چیف جسٹس نےلانڈھی جیل کا دورہ کرنے کی ہدایت کی ہے، چیف جسٹس کی ہدایت پرلانڈھی جیل جارہاہوں، لانڈھی جیل جاکرذمہ داران کےخلاف کارروائی کروں گا۔

مزید پڑھیں : شاہ رخ جتوئی کو ڈیتھ سیل منتقل کیا جائے: چیف جسٹس برہم

اس سے قبل چیف جسٹس پاکستان نے لانڈھی جیل کا اچانک دورہ کیا اورمختلف بیرکس میں گئے، جسٹس ثاقب نثار نے قتل کے مجرم شاہ رخ جتوئی کوسی کلاس میں دیکھ کر جیل سپرنٹنڈنٹ پر برہمی کا اظہارکیا اورحکم دیا کہ شاہ رخ جتوئی کو فوری ڈیتھ سیل منتقل کیاجائے۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ یہ سہولتیں اورآسائش شاہ رخ جتوئی کو کیسے فراہم کی گئی اور آئی جی جیل خانہ جات کو طلب کرلیا گیا۔

چیف جسٹس کی گفتگوکے دوران شاہ رخ جتوئی ڈھٹائی سےمسکراتا رہا جبکہ پولیس حکام نے بھی شاہ رخ جتوئی کوتنبیہ نہیں کی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں