site
stats
پاکستان

لاڑکانہ: وڈیرے کے کہنے پرطالب علم کی جھوٹے الزام میں گرفتاری

student

لاڑکانہ : پولیس نے جھوٹے الزام میں اسکول جانے والے بچے کو راستے سے گرفتار کرکے حوالات میں ڈال دیا، بچے کو مبینہ طور پر وڈیرے سے دوستی نہ کرنے کی پاداش میں حوالات کی ہوا کھانا پڑی، اے آر وائی نیوز کی خبر پر رہا کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق لاڑکانہ پولیس نے اقرباء پروری کی انتہا کردی۔ گرفتار طالب علم کے چھوٹے بھائی نے وڈیرے کے بیٹے کو دوستی کرنے سے انکار کردیا تھا جس پر وڈیرے نے بڑے بھائی اور نویں جماعت کے طالبعلم کو جھوٹے الزام میں گرفتار کرادیا۔

شفقت نامی طالب علم یونیفارم پہنے کتابیں لیے حوالات میں بیٹھا رہا، اس دوران وہ بہت گھبرایا ہوا لگ رہا تھا، اسے مبینہ طور پر وڈیرے کے بیٹے کے کہنے پر حراست میں لیا گیا تھا۔

ایس ایس پی لاڑکانہ نے بتایا کہ شفقت کے خلاف بچے کو زخمی کرنے کا مقدمہ درج ہے۔ اےآر وائی نیوز پر خبر نشر ہونے کے بعد شفقت کو رہا کردیا گیا، معاملے کی انکوائری کرائی گئی تو اس میں واقعے کا ذمہ دار ہیڈ محرر بشیر کھوکھر قرار پایا۔

ایس ایس پی لاڑکانہ نے لڑکے کو جھوٹے الزام میں گرفتار کرنے والے ہیڈ محرر بشیر کھوکھرکے خلاف ایف آئی آر درج کر کے اسے لاک اپ کردیا گیا ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر ضرور شیئر کریں۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

loading...

Most Popular

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top